طلبا کو اپنا اخلاق بلند کرنا ہو گا ورنہ ڈگری کی کوئی اہمیت نہیں،مغربی ہونے کے بجائے جو ہیں اس پر فخر کریں:جنرل زبیر محمود حیات

 طلبا کو اپنا اخلاق بلند کرنا ہو گا ورنہ ڈگری کی کوئی اہمیت نہیں،مغربی ہونے ...
 طلبا کو اپنا اخلاق بلند کرنا ہو گا ورنہ ڈگری کی کوئی اہمیت نہیں،مغربی ہونے کے بجائے جو ہیں اس پر فخر کریں:جنرل زبیر محمود حیات

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)چیرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی جنرل زبیر محمود حیات نے کہا ہے کہ طلبا کو اپنا اخلاق بلند کرنا ہو گا ورنہ ڈگری کی کوئی اہمیت نہیں، طلبا تبدیلی کا محرک بنیں،مغربی ہونے کی بجائے جو ہیں اس پر فخر کریں اور جدیدیت اپنائیں۔

چیئرمین جوائنٹ چیفس آف اسٹاف کمیٹی جنرل زبیر محمود حیات نے فاونڈیشن یونیورسٹی کے کانووکیشن سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کردار وہ نہیں جو آپ کو نظر آئے بلکہ کردار وہ ہے جو دنیا کو نظر آئے،مثبت رویہ، کام سے لگن اور جنون کامیابی کی کنجی ہے،بہترین وہ ہے جو چیلنج قبول کرے اور اسے کامیابی میں بدلے۔جنرل زبیر محمود حیات کا کہنا تھا کہ مغربی ہونے کی بجائے جو ہیں اس پر فخر کریں اور جدیدت اپنائیں، زندگی میں دوسروں کے لیے رکاوٹ اور دیوار ببنے کے بجائے ان کیلئے دروازہ بنیں، زندگی میں کامیابی حاصل کرنے کیلئے ناامید ہونے کے بجائے کوشش جاری رکھیں ۔جنرل زبیر محمود حیات نے کہا کہ میں نے اپنی زندگی میں بہت سے کھوٹے سکوں کو چلتے اور بہت سے ڈگری ہولڈرز کو ذلیل ہوتے دیکھا ہے۔انہوں نے طلبا سے خطاب کے دوران کہا کہ کام، کام اور بہت کام محنت محنت اور بہت محنت سے ہی اللہ کی رحمت آئے گی، اگر علم نے آپ کو انسان نہیں بنایا تو ڈگری کی قیمت ردی کے کاغذ سے بڑھ کر نہیں ہے۔تقریب سے خطاب کے دوران انہوں نے کہا کہ عقاب بنیں یا رینگنے والا جانور انتخاب آپ کا ہے، آپ کو اپنا اخلاق اور کردار بلند کرنا ہوگا ورنہ ڈگری کی کوئی اہمیت نہیں ہے،آج کا معاشرہ ہوس میں زیادہ اور احساس میں کم مبتلا ہے، ہمیں ایسا معاشرہ چاہیے جو احساس میں زیادہ اور ہوس میں کم مبتلا ہو، مدد کرنے کی اہلیت، آگے بڑھنے کی خواہش اور ہمت آپ کو عملی زندگی میں کامیابی دلائے گی۔جنرل زبیر محمود حیات نے مزید کہا کہ مثبت رویہ، کام سے لگن اور جنون کامیابی کی کلید ہے، تازہ سروے میں کہا گیا ہے کہ آج کے طلبہ میں خود کو حالات کے مطابق ڈھالنے کی صلاحیت نہیں ہے، اب طلبہ میں منفی رویہ اور سیکھنے کی صلاحیت کا فقدان پایا جاتا ہے۔طلبہ کو مخاطب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ آپ کے سامنے بہت سے غیر متوقع چیلنجز آئیں گے، بہتر انسان وہ ہی ہے جو چیلنج کو کامیابی میں بدل دے، طلبا ایجنٹ آف چینج بنیں۔چیئرمین جوائنٹ چیفس آف اسٹاف کمیٹی نے کہا کہ بڑے خواب دیکھیں، جو لوگ اور قومیں خواب نہیں دیکھتے کامیاب نہیں ہوتے۔انہوں نے طلبہ کو تاکید کرتے ہوئے کہا کہ زندگی میں اوروں کے لیے دروازہ بنیں دیوار نہیں، کوشش کریں اور زندگی میں حرکت جاری رکھیں، زندگی میں آپ کے لیے اعتماد اور آپ کی ساکھ سب سے اہم ہوتی ہیں،کبھی نہیں سنا کہ کسی شخص کو عاجزی لے ڈوبی ہو مگر تکبر سے ڈوبنے والے بہت دیکھے اس لیے تکبر سے گریز کریں۔

مزید : قومی