رات گئے آئی جی سندھ کو کون گھر سے زبردستی اٹھا کر لے گیا؟ تہلکہ خیز خبرآگئی

رات گئے آئی جی سندھ کو کون گھر سے زبردستی اٹھا کر لے گیا؟ تہلکہ خیز خبرآگئی
رات گئے آئی جی سندھ کو کون گھر سے زبردستی اٹھا کر لے گیا؟ تہلکہ خیز خبرآگئی

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن )کیپٹن صفدر کو کراچی کے مقامی ہوٹل سے مزار قائد کے تقدس کی پامالی کے الزام میں گرفتار کر لیا گیاہے ، جس کے بعد سیاسی شخصیات اور صحافیوں کی جانب سے کئی اہم بیانات سامنے آ رہے ہیں ، سینئر صحافی حامد میر ایک مرتبہ پھر میدان میں آ گئے ہیں اور انہوں نے تہلکہ خیز دعویٰ بھی کر دیاہے ۔

تفصیلات کے مطابق سینئر صحافی حامد میر نے ٹویٹر پر پیغام جاری کرتے ہوئے کہا کہ ”سندھ حکومت نے ن لیگ کے رہنما محمد زبیر کو بتایاہے کہ آئی جی سندھ کو رینجرز کی جانب سے صبح چار بجے مبینہ اغواءکیا گیا اور اس کے بعد انہیں سیکٹر کمانڈر کے دفتر لایا گیا جہاں ایڈیشنل آئی جی پہلے سے ہی موجو د تھے ، سیکٹر کمانڈر کے دفتر میں ان پر کیپٹن صفدر کی گرفتاری کے وارنٹس جاری کرنے کیلئے دباﺅ ڈالا گیا ۔“

حامد میر کا اپنے اگلے پیغام میں کہناتھا کہ ”وفاقی وزیر علی زیدی نے کیپٹن صفدر کی گرفتاری کا کریڈٹ آئی جی سندھ کو دیا ہے لیکن وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے مسلم لیگ ن کے رہنما محمد زبیر کو تھوڑی دیر پہلے بتایا ہے کہ یہ سارا کام سندھ رینجرز کے ذریعہ کیا گیا رینجرز نے سندھ پولیس پر دباو ڈال کر کیپٹن صفدر کو گرفتار کرایا“۔

اسی حوالے سے کچھ دیر قبل سینئر صحافی مبشر زیدی نے بھی ٹویٹ کیا اور دبے الفاظ میں کہا کہ”سندھ پولیس کے اعلیٰ ترین افسر کو صبح چار بجے ان کے گھر کا گھیراو کیا گیا اورا سے اٹھایا گیا ، ان پر پرچہ درج کرنے کا کہا گیا اور اس کے آرڈر کے بعد اس کو چھوڑا گیا۔اب یہ مت پوچھنا کہ کس نے اٹھایا۔“

مزید :

قومی -