” اب غیرت کا تقاضا ہے کہ سندھ اسمبلی توڑ دی جائے “ سلیم صافی نے اپوزیشن کو مشورہ دیدیا 

” اب غیرت کا تقاضا ہے کہ سندھ اسمبلی توڑ دی جائے “ سلیم صافی نے اپوزیشن کو ...
” اب غیرت کا تقاضا ہے کہ سندھ اسمبلی توڑ دی جائے “ سلیم صافی نے اپوزیشن کو مشورہ دیدیا 

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن )ن لیگ کی نائب صدر مریم نوازشریف اور ان کے شوہر کیپٹن صفدر گزشتہ رات پی ڈی ایم کے جلسے میں شرکت کے بعد کراچی کے مقامی ہوٹل میں قیام پذیر تھے کہ پولیس نے آج صبح سویرے چھاپہ مار کر کیپٹن صفدر کو مزار قائد کے تقدس پامالی کیس میں حراست میں لے لیا جس کے بعد سے سیاسی درجہ حرارت عروج پر پہنچ چکا ہے اور حیران کن دعوے کیے جارہے ہیں ۔

تفصیلات کے مطابق اس معاملے پر سینئر صحافی سلیم صافی نے بھی خاموشی توڑی دی ہے اور تبصرہ کرتے ہوئے کہاہے کہ ” آصف علی زرداری اوربلاول بھٹو زرداری بلوچ سندھی ہیں،مریم نواز ان کی مہمان تھیں۔ان کی حکومت میں ا ن کے کمرے کاتوڑاجانا معمولی واقعہ نہیں ہے ، سندھی اوربلوچ غیرت کاتقاضاہے کہ آج ہی سندھ اسمبلی توڑکرحکومت چھوڑدی جائے۔جب تک جعلی اسمبلیوں اور جعلی حکومتوں کا حصہ ہوگی ، تب تک اپوزیشن کو بھی جعلی سمجھا جائے گا۔“

اس سے قبل سینئر صحافی حامد میر نے ٹویٹر پر پیغام جاری کرتے ہوئے کہا کہ ”سندھ حکومت نے ن لیگ کی رہنما محمد زبیر کو بتایاہے کہ آئی جی سندھ کو رینجرز کی جانب سے صبح چار بجے مبینہ اغواءکیا گیا اور اس کے بعد انہیں سیکٹر کمانڈر کے دفتر لایا گیا جہاں ایڈیشنل آئی جی پہلے سے ہی موجو د تھے ، سیکٹر کمانڈر کے دفتر میں ان پر کیپٹن صفدر کی گرفتاری کے وارنٹس جاری کرنے کیلئے دباﺅ ڈالا گیا ۔“

سینئر صحافی کامران خان نے بھی معاملے کی نوعیت کو بھانپتے ہوئے ٹویٹر سنبھالا اور دعویٰ کیا کہ ”پی ڈی ایم اندرونی کھیل شروع مریم بی بی آئندہ سندھ آنے کی دعوت سوچ کر قبول فرمائیں ،ناقابل تردید زرائع بتاتے ہیں کہ آئی جی سندھ مشتاق مہر ہنستے کھیلتے کیپٹن صفدر کی گرفتاری کے تمام مراحل میں اپنے سینئر اہلکاروں کے ساتھ شریک رہے، اغوا وغیرہ کی کہانی مریم بی بی کی تسلی کے لئے ہے۔“

مزید :

قومی -