رات کے ہاتھ سے دن نکلنے لگے| وسیم بریلوی |

رات کے ہاتھ سے دن نکلنے لگے| وسیم بریلوی |
رات کے ہاتھ سے دن نکلنے لگے| وسیم بریلوی |

  

رات کے ہاتھ سے دن نکلنے لگے

جائیدادوں کے مالک بدلنے لگے

ایک افواہ سب رونقیں لے گئی

دیکھتے دیکھتے شہر بدلنے لگے

میں تو کھویا رہوں گا ترے پیار میں

تو ہی کہ دینا جب تو بدلنے لگے

سوچنے سے کوئی راہ ملتی نہیں

چل دیے ہیں تو رستے نکلنے لگے

چھین لیں شہرتوں نے سب آزادیاں

راہ چلتوں سے رشتے نکلنے لگے

شاعر: وسیم بریلوی

 ( شعری مجموعہ:آنکھ آنسو ہوئی؛سال اشاعت،2000)

Raat   K   Haath   Say   Din   Nikalnay    Lagay

Jaidaadon   K   Maalik   Badalnay    Lagay

 Aik   Afwaah   Sab    Raonqen   Lay   Gai

Daikhtay   Daikhtay   Shehr   Badalnay    Lagay

 Main   To   Khoya    Rahun   Ga   Tiray   Payaar   Men

Tu   Hi   Keh    Daina    Jab   Tu   Badalnay    Lagay

 Sochnay    Say   Koi   Raah   Milti   Nehen

Chall   Diayay   Hen   To    Rastay   Nikalnay    Lagay

 Chheen   Leen   Sohraton   Nay   Sab   Azaadiyaan

Raah   Chalton   Say   Rishtay   Nikalnay    Lagay

Poet: Wasim   Barelvi 

 

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -