23 ستمبر کو دو بارہ صوبہ بھر میں انسداد ڈینگی ڈے منایا جائیگا ،شہباز شریف

23 ستمبر کو دو بارہ صوبہ بھر میں انسداد ڈینگی ڈے منایا جائیگا ،شہباز شریف

لاہور (ثناءنےوز)وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے کہا ہے کہ ڈینگی کے خلاف حالت جنگ میں ہیں اور اس موذی وائرس سے نمٹنے کے معاملے میں غفلت کی کوئی گنجائش نہیں- حالیہ بارشوں کے بعدعوام اور تمام سرکاری مشینری کے مزید متحرک ہونے کی ضرورت پہلے سے بڑھ گئی ہے- 2 ستمبر کی طرح 23ستمبر کو دوبارہ پورے صوبے میں انسداد ڈینگی ڈے بھرپور طریقے سے منایا جائے گا- حساس مقامات پر فوگنگ اور سپرے کا عمل جاری رہنا چاہیئے- کباڑ خانوں، قبرستانوں، کارخانوں، ورکشاپس، ٹائر شاپس اور نرسریوں میں ڈینگی لاورا کی چیکنگ اور موقع پر تلفی کا کام تیز کیا جائے - انہوں نے انسداد ڈینگی مہم پر مامور عملے کے بعض ارکان کو تنخواہوں کی عدم ادائیگی کا سخت نوٹس لیتے ہوئے انہیں فوری ادائیگی کا حکم دیا-منگل کو وزیراعلی پنجاب کی زیر صدارت صوبائی انسداد ڈینگی کمیٹی کا اجلاس منعقد ہوا۔جس میں وزیر تعلیم مجتبی شجاع الرحمن، خواجہ سلمان رفیق، ارکان اسمبلی، متعلقہ سیکرٹریز، کمشنر لاہور ڈویژن، ڈی سی او لاہور، ترقیاتی اداروں کے سربراہان، طبی ماہرین اور متعلقہ حکام نے شرکت کی-اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعلی محمد شہباز شریف نے کہا کہ اداروں اور متعلقہ حکام کے باہمی رابطوں کو موثر بنا کر انسداد ڈینگی کے اقدامات کے مثبت نتائج حاصل کئے جاسکتے ہیں، اس سلسلے میں تمام متعلقہ محکموں کے درمیان رابطے مزید موثر بنائے جائیں- انہوں نے ہدایت کی کہ 23 ستمبر کو انسداد ڈینگی ڈے کے حوالے سے سول سوسائٹی، طلبا و طالبات، علماءکرام، سرکاری مشینری اورمعاشرے کے دیگر تمام طبقات کو متحرک کیا جائے- انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ 23 ستمبر کو اسی جوش و جذبے کا مظاہرہ کیا جائے جو ہمیں 2 ستمبر کو انسداد ڈینگی ڈے کے موقع پر نظر آیا تھا- انہوں نے کہا کہ عوام کے بھرپور تعاون کے ساتھ انسداد ڈینگی مہم زور و شور سے آگے بڑھ رہی ہے اور موجودہ سیزن کے دوران ڈینگی کے نقصانات گزشتہ برس کی نسبت کہیں کم ہیں- ضرورت اس امر کی ہے کہ ان ڈور اور آﺅٹ ڈور سرویلنس بھرپور طریقے سے جاری رکھی جائے- سرکاری اور نجی تعلیمی اداروں میں صفائی کے انتظامات بہتر بنانے کے حوالے سے اقدامات کئے جائیں- وزیراعلی نے لاہور کے 200 سرکاری و نجی و تعلیمی اداروں میں انسداد ڈینگی انتظامات کی چیکنگ کرکے اگلے ہفتے رپورٹ پیش کرنے اورایمرجنسی رسپانس کمیٹیوں کی کارکردگی مزید بہتر بنانے کی ہدایت کی-انہوں نے زور دیا کہ وفاق کے زیرانتظام اداروں کو بھی اپنے دفاتر اور رہائشی کالونیوں میں انسداد ڈینگی کے موثر انتظامات کرنے کا پابند بنایا جائے-تعاون نہ کرنے والے اداروں کے خلاف مقدمات درج کرائے جائیں اور متعلقہ افراد کی گرفتاری عمل میں لائی جائے- اجلاس میں بتایا گیا کہ ڈینگی سپرے کیلئے بھرتی کئے گئے سٹاف کو مرحلہ وار تنخواہوں کی ادائیگی شروع کردی گئی ہے اور لاہور میں تنخواہوں کی ادائیگی کا عمل مکمل کیا جاچکا ہے جبکہ دیگر شہروںمیں بھی جلد ادائیگی کے انتظامات کر لئے گئے ہیں- وزیراعلی نے ہدایت کی کہ عملے کی بروقت تنخواہوں کی ادائیگی کو ہر صورت یقینی بنایا جائے تاکہ ان کی کارکردگی پر کوئی اثر نہ پڑے- انسداد ڈینگی مہم پر مامور عملے کی تنخواہوں کی ادائیگی میں تاخیر برداشت نہیں کروں گا- انہوں نے کہا کہ انسداد ڈینگی کے حوالے سے آگاہی مہم جاری رکھی جائے- وزیراعلی نے انسداد ڈینگی انتظامات کی مانیٹرنگ کیلئے خواجہ سلمان رفیق کی سربراہی میں ایک کمیٹی بھی تشکیل دی جو 7 روز میں سفارشات مرتب کرکے وزیراعلی کو پیش کرے گی- علاوہ ازیں ایوان وزیراعلیٰ میں میٹرک کے پوزیشن ہولڈرز طلباءوطالبات کے اعزاز میں تقریب کا اہتمام کیا گیا جس میں طلباوطالبات، اداروں کے سربراہان اور اساتذہ کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔ تقریب کے مہمان خصوصی وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف تھے۔ جبکہ وزیراعلیٰ کے معاون خصوصی برائے تعلیم سید زعیم حسین قادری اور سینیٹر سردار ذوالفقار خان کھوسہ نے بھی تقریب میں خصوصی شرکت کی۔ تقریب میں 13 پوزیشن ہولڈرز طلباءسمیت 109 طلباءنے شرکت کی جبکہ پوزیشن ہولڈرز کے اداروں کے سربراہان کو بھی انعامات دیا گیا۔ پہلی پوزیشن کے ادارے کو 4 لاکھ، دوسری پوزیشن والے کو تین لاکھ اور تیسری پوزیشن والے کو دو لاکھ روپے کا انعام دیے گئے۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے کہا کہ پنجاب کے کونے کونے میں تعلیم کی روشنی پہنچانا پنجاب حکومت کا اولین فرض ہے جس کیلئے اربوں روپے کی لاگت سے دانش سکول کا قیام عمل میںلایا گیا ہے اور دانش سکول تعلیمی میدان میںاہم کردار ادا کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ملک اس وقت دو حصوں میں بٹ چکا ہے۔ امیر کا پاکستان الگ ہے اور غریب کا پاکستان الگ، معاشرتی تقسیم نے ہمارے نظام کو تباہ کرکے رکھ دیا ہے۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ پنجاب حکومت 10 ارب روپے کی خطیر رقم سے انڈوومنٹ فنڈز کے ذریعے مستحق طلباوطالبات کو سکالرشپ فراہم کررہی ہے۔

مزید : صفحہ اول


loading...