بہتر پیداوار کے لئے فصلوں سے جڑی بوٹیاں تلف کی جائیں ۔ زرعی ماہرین

بہتر پیداوار کے لئے فصلوں سے جڑی بوٹیاں تلف کی جائیں ۔ زرعی ماہرین

لاہور (پ ر)ایوب زرعی تحقیقاتی ادارہ فیصل آباد کے ماہرین زراعت کاکہناہے کہ پاکستان میں زرعی ادویات کا 93.34 فیصد حصہ کیڑے مارنے کیلئے استعمال ہوتاہے جبکہ فصلات کی چھپی دشمن جڑی بوٹیوں کی تلفی کیلئے صرف.3 4 فیصد ادویات استعمال کی جاتی ہیں نیز عالم اقوام میں جڑی بوٹی مار ادویات کی فروخت کا تناسب 45.3 فیصد تک ہے۔ جڑی بوٹیاں کیڑے مکوڑوں سے زیادہ خطر ناک ہیں جو فصلوں سے خوراک ، پانی ، روشنی چھین کر ان کی پیداواری صلاحیت کو بری طرح متاثر کرتی ہیں ۔ پاکستان میں صورتحال اس کے برعکس ہے کیونکہ یہاں پر کیڑے مار ادویات 93.3 فیصد ، جڑی بوٹیاں تلف کرنے والی ادویات4.3 فیصد اور پھپھوندی کش ادویات 2.3 فیصد کے تناسب سے استعمال کی جاتی ہیں

مزید : کامرس


loading...