کراچی میں جماعت اسلامی کی کال پر ہڑتال ،قتل وغارت جاری ، بعض علاقوں میں کشیدگی برقرار

کراچی میں جماعت اسلامی کی کال پر ہڑتال ،قتل وغارت جاری ، بعض علاقوں میں ...
کراچی میں جماعت اسلامی کی کال پر ہڑتال ،قتل وغارت جاری ، بعض علاقوں میں کشیدگی برقرار

  


کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) شہر قائد میں سابق ٹاﺅن ناظم کے قتل کیخلاف جماعت اسلامی کی طرف سے جزوی ہڑتال کی جارہی ہے جس دوران سڑکوں پر ٹریفک معمول سے کم ہے جبکہ جماعت اسلامی کے رہنماﺅں کے گھروں پر چھاپے مار کر درجنوں افراد کو حراست میں لے لیاگیاہے ۔ہڑتال کے دوران شہر میں امن وامان کی صورتحال بھی خراب ہے اور صبح سے اب تک دو گاڑیاں نذرآتش اور پانچ افراد کو ابدی نیند سلادیاگیاہے ۔نیو کراچی،شاہراہ فیصل،لیاری میراناکہ،پٹیل پاڑہ،ناظم آباد اور شیر شاہ میں مطاہرین نے ہنگامہ آرائی کی اور ٹائروں کو آگ لگا کر ٹریفک بلاک کر دی۔قائد آباد میں مشتعل افراد نے ٹرک اور نارتھ کراچی میں پتھاروں کو آگ لگا دی۔لی مارکیٹ کے قریب ہوائی فائرنگ سے خوف و ہرا س پھیل گیا اور دکانیں بند ہوگئیں ۔ مظاہرہین نے نیشنل ہائی وے پر ٹائر جلا کر سڑک بلاک کردی جسے بعد ازاں پولیس نے کھلوادیا۔ بعض سکول و کالج بھی بند ہیں ۔اب تک ملنے والی اطلاعات کے مطابق صبح سے اب تک مختلف علاقوں میں کشیدگی کے واقعات میں پانچ افراد قتل اور چھ زخمی ہوچکے ہیں جنہیں ہسپتالوں میں منتقل کردیاگیاہے ۔ جماعت اسلامی کراچی کے امیر محمد حسین محنتی نے بتایاکہ کل بھی اُن کی پرامن ریلی تھی لیکن پولیس نے فائرنگ کردی جس کے نتیجے میں اُن کا ایک کارکن عبدالوحید جاں بحق ہوگیا۔ہڑتال کے پیش نظر شہر کے بہت سے پٹرول پمپ اور چی این جی سٹیشن بھی بند ہیں۔جماعت اسلامی کے ترجمان کے مطابق پولیس نے لانڈھی ،گورنگی ،شاہ فیصل کالونی ،لیاری اور شہر کے دیگر علاقوں میں چھاپے مار کر سو سے زائد کارکنوں کو حراست میں لے کر نامعلوم مقام پر منتقل کردیا۔ گورنر ہاوس کے باہر ممکنہ احتجاج کے پیش نظر پولیس نے ایم اے جناح روڈ سے گورنر ہاوس جانے والے راستوں کو رکاوٹیں کھڑی کرکے بند کردیا۔کشیدگی والے علاقے میں پولیس کی اضافی نفری کو تعینات کردیا گیا ہے۔

مزید : کراچی


loading...