نیشنل ایکشن پلان کی تمام شقوں پر عملدرآمد ضروری ہے،فاروق ستار

نیشنل ایکشن پلان کی تمام شقوں پر عملدرآمد ضروری ہے،فاروق ستار

  

لاہور(خبر نگار خصوصی)ایم کیو ایم کے مرکزی رہنما فاروق ستار نے کہا ہے کہ دہشتگردی کے خاتمے کے ساتھ انتہا پسندی کا خاتمہ بھی ضروری ہے اور عوام کی حمایت کے بغیر دہشتگردی کا خاتمہ ممکن نہیں ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے لاہور پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔فاروق ستار نے کہا کہ ملک میں بلدیاتی الیکشن ضرور ہونے چاہیں لیکن ان میں بلدیاتی سسٹم کو بااختیار بھی بنانا چاہیے۔ضیاء الحق کے1979کے ایکٹ کے تحت ہونے والے انتخابات کا کچھ فائد ہ نہیں ہے کیونکہ اس کیمطابق بلدیاتی رہنما بے اختیار ہیں ۔انہوں نے کہا کہ ملک کے اندر دشمن قوتیں ملک کو نقصان پہنچا رہی ہیں جن کا خاتمہ ضروری ہے دشمن کیخلاف جنگ ہماری ہے جو ابھی ختم نہیں ہوئی ۔دہشتگردی کے خاتمے سے جنگ ختم نہیں ہوگی اس کے ساتھ انتہا پسندی بھی ختم کرنی ہو گی جس کیلئے نیشنل ایکشن پلان کی تمام شقوں پر عملدرآمد ضروری ہے ۔مقامی حکومتوں کا قیام دہشتگردی کے خاتمے میں مؤثر کردار ادا کر سکتا ہے اور دہشتگردی کے خاتمے کیلئے عوامی حمایت نہایت ضروری ہے ۔دہشتگردوں نے نوجوانوں ،پولیس اور نمازیوں کو بھی نشانہ بنایا اور سفاکانہ طریقہ اختیار کیا ۔ ملک کے دشمن دہشتگردکہیں ناکہیں ہماری بستیوں میں رہتے ہیں جب تک عوام خود اپنے اطراف میں نظر نہیں دوڑائے گی دہشتگردی کا خاتمہ ممکن نہیں آج کراچی میں ایم کیو ایم کے ممبر صوبائی اسمبلی سیف الدین خالد پر حملہ ہو اس سے قبل بھی ہمارے رہنماؤں کوشہید کیا گیا ۔وزیر اعظم پاکستان کو پتا ہونا چاہیے کہ ملک کے دشمن کون ہیں ۔فاروق ستار نے کہا کہ ایم کیو ایم کے150کارکن لاپتہ ہیں اگر کسی اور جماعت کے اتنے زیادہ کارکن لاپتہ ہوں تو ان سے پوچھا جائے کہ ان کا ری ایکشن کیا ہو گا۔انہو ں نے پشاور میں ائیر بیس کیمپ پر حملے کی مزمت کی۔

مزید :

صفحہ آخر -