پولیس کی جانب سے ناقص تفتیش پر لڑکی نے استغاثہ دائر کردیا

پولیس کی جانب سے ناقص تفتیش پر لڑکی نے استغاثہ دائر کردیا

  

لاہور(نامہ نگار)شادباغ سے دو ماہ قبل اغوا کرکے کراچی لے جائی جانے والی شمائلہ بی بی نے پولیس کی طرف سے تفتیش ٹھیک نہ کرنے پر استغاثہ سیشن عدالت میں دائر کردیا۔سیشن جج بہادرعلی خان نے استغاثہ سماعت کے لئے ایڈیشنل سیشن جج اعجاز بٹ کی عدالت میں بھجوا دیا۔شمائلہ کا عدالت میں آج 19ستمبر کو بیان قلمبند کیا جائے گا عدالت میں شمائلہ نے بتایا کہ وہ شادی شدہ ہے اس کو دو ماہ قبل وقاص وسیم مقبولاں بی بی سمیت چھ افراد نے زبردستی اغوا کیا اس کو ویران جگہ پر لے جہاں پر انہوں نے اس کے زیورات اتار کر اپنے قبضے میں لیا اس کو زبردستی شربت پلایا جس سے وہ بے ہوش ہوگئی اس کو ہوش آیا تو بتایا گیا کہ وہ کراچی مین ہے اگر شور کیا تو اس کو قتل کردیا جائے گا ملزمان اس کے ساتھ زیادتی کرتے رہے اس کی ساس نے تھانہ شادباغ اغوا کا پرچہ درج کرایا لیکن اے ایس آئی نے اس کے کیس کی تفتیش ٹھیک طریقے سے نہ کی بلکہ ملزمان کو سپورٹ کرتا رہا۔

اس نے کسی طرح ساس کو اطلاع کی جس نے پولیس کی مدد سے اس کو کراچی سے برآمد کرلیا ملزمان وہاں سے فرار ہو گے لاہورآنے کے بعد پولیس آفیسر ملزمان سے مل گیا اس نے اس کا ابھی تک میڈیکل تک نہیں کرایا عدالت سے استدعا ہے کہ ملزمان کے خلاف اغوا اور حدود کے تحت کارروائی کرکے سزا دی جائے ۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -