فاروق آباد:عطائی ڈاکٹر کے ہاتھوں دوران آپریشن نومولود بچہ جاں بحق

فاروق آباد:عطائی ڈاکٹر کے ہاتھوں دوران آپریشن نومولود بچہ جاں بحق

  

فاروق آباد ( نامہ نگار+نمائندہ خصوصی) عطائی ڈاکٹر کے ہاتھوں دوران آپریشن نومولود بچہ جاں بحق ڈی سی او شیخوپورہ کا ایکشن عطائی گرفتار ہسپتال سیل ،آپریشن تھیٹر کا سامان پولیس نے آپنے قبضہ میں لے لیا ۔ڈی سی او شیخوپورہ محترمہ کرن خورشید کا ایک عام غریب شخص کی کال پر فوری ایکشن عطائی ڈاکٹر کو رنگے ہاتھوں گرفتار کرکے تھانہ سٹی پولیس کے حوالے کر دیا ۔بتایا گیا ہے کہ فاروق آبادکے علاقہ گاؤں مریدکے کا رہائشی غلام مرتضیٰ جوکہ محنت مزدوری کرتا ہے اپنی بیوی کو زچگی کی حالت میں صفانوالہ چوک میں واقع عطائی کلینک میں لے آیا دوران آپریشن نومولود بچہ جاں بحق ہوگیا اور اس کی بیوی کی حالت بگڑ گئی جسے فوری طور پرمقامی سرکاری ہسپتال میں منتقل کر دیا گیا غلام مرتضی نے 15پر کال کر دی جس پر ڈی سی او شیخوپورہ نے فوری ایکشن لیا اور ای ڈی او ہیلتھ ،ڈی ایچ او ہیلتھ ،اے سی شیخوپورہ ،ڈی ڈی ایچ او اور دیگر عملہ کے ساتھ عطائی کے کلینک پر چھاپہ مارا اور عطائی ڈاکٹر آصف کو گرفتار کر لیا جس نے بتایا کہ مذکورہ مریضہ کو12ہزار روپے کے عوض کلینک میں داخل کیا تھا اور لاہور جنرل ہسپتال کے ڈاکٹر رانا عبدالمجید نے آپریشن کیا تھاڈی سی او کے حکم پر عطائی کلینک میں موجود تمام سازو سامان مشینری اورآلات کوبطورمال مقدمہ قبضے میں لے لیا اور عطائی ڈاکٹر آصف کے خلاف فوجداری مقدمہ کار سرکار میں مداخلت اور نومولود بچے کی موت پر قتل کا مقدمہ درج کرنے کا حکم دیاعطائی ڈاکٹر ملک آصف نے اپنے بیان میں کہا کہ اپریشن ایک سینئر سرجن ڈاکٹر نے کیا ہے اس میں میرا کوئی قصور نہ ہے ۔

ڈی سی او شیخوپورہ نے محنت کش غلام مرتضی کو کہا کہ وہ کسی پریشر یا دباؤمیں نہ آئے آپکو مکمل تحفظ اور انصاف دیا جائے گا ڈی سی او نے مزیدکہاکہ کسی کو اجازت نہیں دی جائے گی کہ وہ لوگوں کی جانوں سے کھیلے اور قانون کی خلاف ورزی کرے ڈی سی او شیخوپورہ نے یہ بھی کہا کہ فاروق آباد شہر میں ایسے قصاب اور چمڑا فروش جو چربی کو پگھلاتے ہیں اور ایسے ہڈی جوڑ جو لوگوں کو معذور بنا رہے ہیں ان کی لسٹیں از سر نومرتب کی جارہی ہیں ان کے خلاف دوبارہ ایکشن ہو رہا ہے ۔

مزید :

علاقائی -