افغانستان میں دہشتگردوں کے ٹھکانوں کے معاملے پر امریکہ سے بات کی ہے ، خواجہ آصف

افغانستان میں دہشتگردوں کے ٹھکانوں کے معاملے پر امریکہ سے بات کی ہے ، خواجہ ...

  

 اسلام آباد (آئی این پی) وزیردفاع خواجہ محمد آصف نے کہا ہے کہ دہشت گردی کی جنگ میں 20ہزار افراد شہید ہو گئے ہیں، افغانستان میں دہشت گردوں کے ٹھکانوں پر امریکہ سے بات کی ہے، آپریشن ضرب عضب میں ابھی 100فیصد کامیابی حاصل نہیں ہوئی، جنگ لڑ رہے ہیں، جنگوں کا ٹائم ٹیبل نہیں ہوتا، کیپٹن اسفند یار کے والد نے بتایا کہ ان کے بیٹے نے سینے پر گولی کھائی، شہداء کے والدین قیمتی سرمایہ گنوا کر بھی شہیدوں پر فخر کرتے ہیں۔ وہ جمعہ کو نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ افغانستان میں دہشت گردوں کے ٹھکانے ہیں ہم مسلسل اسکے ساتھ یہ معاملہ اٹھا رہے ہیں، امریکہ سے بھی دہشت گردوں کے ٹھکانوں پر بات کی، اب افغانستان سمجھ رہا ہے کہ ان کے ملک میں بیٹھے دہشت گرد پاکستان میں حملے کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ آپریشن ضرب عضب میں 100فیصدنہیں 70فیصد کامیابی حاصل ہوئی، جسے باقی 30فیصد کیلئے جو جنگ لڑ رہے ہیں جلد کامیاب ہوں گے، جنگوں کا کوئی ٹائم ٹیبل نہیں ہوتا، ہمارے 20ہزارافراد دہشت گردی کیخلا ف جنگ میں شہید ہو چکے ہیں۔انہوں نے کہا کہ سانحہ بڈھ بیر کے دہشت گرد فارسی اور پشتو بول رہے تھے۔ خواجہ محمد آصف نے کہا کہ وطن کی مٹی پر جانیں قربان کرنے والوں پر مجھے فخر ہے، میں شہید کیپٹن اسفند یار کے والد سے ملا، اس کا ایسا حوصلہ دیکھا جس کا میں تصور بھی نہیں کر سکتا تھا، اس کے والد نے مجھے بتایا کہ میں نے سب سے پہلے دیکھاہے کہ میرے بیٹے نے کہاں گولی کھائی، میرے بیٹے نے سینے پر گولی کھائی ہے۔ وزیر دفاع نے کہا کہ شہداء کے والدین اپنا قیمتی سرمایہ گنوا کر بھی شہیدوں پر فخر کرتے ہیں۔

مزید :

صفحہ اول -