لاہور ہائیکورٹ کا جی ایم پی ٹی سی ایل کو گرفتارکرکے 12 بجے پیش کرنے کا حکم

لاہور ہائیکورٹ کا جی ایم پی ٹی سی ایل کو گرفتارکرکے 12 بجے پیش کرنے کا حکم
لاہور ہائیکورٹ کا جی ایم پی ٹی سی ایل کو گرفتارکرکے 12 بجے پیش کرنے کا حکم

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)لاہور ہائیکورٹ نے مال روڈ سے پی ٹی سی ایل تاروں کو نہ ہٹانے کیخلاف درخواست کی سماعت کے دوران جی ایم کی جگہ بزنس منیجر کے پیش ہونے پر سخت برہمی کا اظہار کیا،عدالت نے بزنس منیجر پی ٹی سی ایل کی سرزنش کرکے کورٹ روم سے نکال دیااورپولیس کو جی ایم پی ٹی سی ایل کو گرفتارکرکے 12 بجے پیش کرنے کا حکم دیدیا۔

تفصیلات کے مطابق ہائیکورٹ کے جسٹس علی اکبر قریشی نے مال روڈ سے پی ٹی سی ایل تاروں کو نہ ہٹانے کیخلاف درخواست کی سماعت کی، عدالت نے جی ایم کی جگہ بزنس منیجرکے پیش ہونے پراظہاربرہمی کرتے ہوئے استفسار کیا کہ جنرل منیجرپی ٹی سی ایل کہاں ہیں؟،بزنس منیجر نے کہا کہ جی ایم کواوربہت سے کام ہیں اس لیے پیش نہیں ہوسکتے۔

عدالت نے جنرل منیجر پی ٹی سی ایل کوگرفتارکرکے12بجے پیش کرنے کاحکم دے دیا عدالت نے ریمارکس دیئے کہ پولیس جی ایم پی ٹی سی ایل کوگرفتارکرکے12بجے پیش کرے،عدالت نے بزنس منیجرپی ٹی سی ایل کی سرزنش کرکے کورٹ روم سے نکال دیا،عدالت نے ریمارکس دیئے کہ شرم آنی چاہئے،سرکاری ملازم ہوکرکورٹ کااحترام نہیں کرتے۔

مزید : قومی /علاقائی /پنجاب /لاہور