’ پٹواریوں نے لوٹ لگا رکھی ہے،نیب کے زیادہ تر کیسز بھی ان سے متعلق ہیں، شہری علاقوں میں۔۔۔‘ سپریم کورٹ نے پٹوار خانوں پر پابندی کے فیصلے پر بڑا قدم اٹھالیا

’ پٹواریوں نے لوٹ لگا رکھی ہے،نیب کے زیادہ تر کیسز بھی ان سے متعلق ہیں، ...
’ پٹواریوں نے لوٹ لگا رکھی ہے،نیب کے زیادہ تر کیسز بھی ان سے متعلق ہیں، شہری علاقوں میں۔۔۔‘ سپریم کورٹ نے پٹوار خانوں پر پابندی کے فیصلے پر بڑا قدم اٹھالیا

  


اسلام آباد(صباح نیوز)سپریم کورٹ نے شہری علا قوں میں پٹوارخانوں پر پابندی کے فیصلے پر نظر ثانی درخواستیں سماعت کے لئے منظور کرکے چاروں صوبوں کے ایڈووکیٹ جنرلز کو نوٹسز جاری کرکے جواب طلب کرلیا ہے ۔

نظر ثانی درخواستوں کی سماعت جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کی۔دوران سماعت جسٹس اعجازالاحسن نے کہاکہ پٹواری فرد کے دس لاکھ مانگ لیتا ہے اس لیے عدالت نے شہری علا قوں میں پٹوار خانے ختم کرنے کا فیصلہ دیا تھا اور زمین کی خریدوفروخت کو رجسٹرڈ سیل ڈیڈ کے ذریعے  کر نے کی ہدا یت کی گئی تھی ۔

درخواست گزار کے وکیل نے موقف اپنایا کہ عدالتی فیصلے کی وجہ سے  شہری علاقوں میں زمینوں کی رجسٹریشن کا عمل رک چکا ہے ، پٹواری فرد نہیں دیتے  اورفرد نہ ملنے سے رجسٹری نہیں ہوتی۔

جسٹس عمر عطا بندیال نے کہاکہ اسلام آباد سمیت ملک کے شہری علاقوں میں پٹواریوں نے لوٹ لگا رکھی ہے،نیب کے زیادہ تر کرپشن کیسز پٹواریوں سے متعلق ہیں،پٹواریوں کا نظام جدید طرز پر بنانا چاہیے ، سب سے زیادہ کرپشن پٹواریوں کے نظام میں ہے ، شہری علاقوں میں پراپرٹی رکھنے والوں کو قانونی تحفظ درکار ہے ۔

عدالت نے ابتدائی سماعت کے بعد درخواستیں باقاعدہ سماعت کے لیے منظور کیں اور مزید سماعت ایک ماہ کے لیے ملتوی کر تے ہوئے شہری علا قوں میں پٹوارخانوں پر پابندی کے فیصلے کے خلاف نظر ثانی درخواستوں میں تمام صوبوں کے ایڈووکیٹ جنرلز کو نوٹسز جاری کردئیے۔

مزید : علاقائی /اسلام آباد


loading...