عوام کو سستے اور فوری انصاف کی فراہمی کے لئے عدالتی نظام کو جدید ٹیکنالوجی سے لیس کیاگیا:چیف جسٹس آصف سعید خان کھوسہ

عوام کو سستے اور فوری انصاف کی فراہمی کے لئے عدالتی نظام کو جدید ٹیکنالوجی ...
عوام کو سستے اور فوری انصاف کی فراہمی کے لئے عدالتی نظام کو جدید ٹیکنالوجی سے لیس کیاگیا:چیف جسٹس آصف سعید خان کھوسہ

  


اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)چیف جسٹس سپریم کورٹ آف پاکستان جسٹس  آصف سعید خان کھوسہ نے کہا ہے کہ ہمیں ہر سطح پر چاہے سکول ہو یا مدرسہ؟ جدید ٹیکنالوجی سے استفادہ حاصل کرنا چاہیے،عوام کو سستے اور فوری انصاف کی فراہمی کے لئے عدالتی نظام کو جدید ٹیکنالوجی سے لیس کیاگیا ہے۔

سپریم کورٹ کی ویب سائٹ کو اپ ڈیٹ کرنے  اور ریسرچ سنٹرکے قیام کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے چیف جسٹس نے کہا کہ جدید ٹیکنالوجی کے بغیر ہم دنیا سے پیچھے رہ جائیں گے، عدالتی نظام میں بھی جدید ٹیکنالوجی سے استفسادہ حاصل کر کے ای کورٹس قائم کی گئیں،ای کورٹس کے قیام سے گواہوں کے بیانات عدالت سے باہر بھی ریکارڈ ہوسکیں گے جس سے مقدمات کے جلد فیصلوں میں مدد ملے گی۔

انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ میں ویڈیو لنک کے ذریعے لاہور ،کراچی،پشاور اور کوئٹہ سے مقدمات اسلام آباد میں بیٹھ کر سنے جاتے ہیں،اب وکیل کسی بھی برانچ رجسٹری سے کیس پیش کرسکتا ہے۔چیف جسٹس نے کہا کہ وکلا کی مدد  کے لئے ریسرچ سنٹر بھی قائم کردیا گیا ہے ،جہاں کسی بھی قانونی نکتے پر متعلقہ مواد دستیاب ہے جبکہ ججوں کی معاونت کے لئے مصنوعی ذہانت کے پورٹل کا اجرا کردیا گیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہمارے جج بہت قابل ہیں لیکن مصنوعی ذہانت سے انھیں  یہ معلوم ہوجائے گا کہ ان کے سامنے جو کیس زیر غور ہے اس سے پہلے اس نوعیت کے کیسز میں دنیا بھر میں کیا کیا فیصلے ہوئے ہیں؟۔

چیف جسٹس کا کہناتھا کہ1991میں میری بیٹی پہلی کلاس میں گئی اوربتایا کہ اسےکمپیوٹرسکھایاجارہا ہے،مجھےاس وقت حیرانی ہوئی اور میں نے گھر میں پہلا کمپیوٹر لیا،جب پہلا موبائل  لیا تو بہت حیران کن لگا،مدرسہ اور سکول سمیت جہاں بھی تعلیم دی جاتی ہے جدید ٹیکنالوجی نہ ہو تو ہم بہت پیچھے رہ جائیں گے۔انھوں نے کہا کہ ماڈل کورٹس نے ہمارے عدالتی نظام میں نئی تبدیلی لائی ہے،ماڈل کورٹس کے نتائج انتہائی حوصلہ افزا ہیں اس لئے ماڈل کورٹس کے بعد ہم نے ای کورٹ کا آغاز بھی کردیا۔چیف جسٹس نے کہا جدید ٹیکنالوجی کا استعمال پیسے اور وقت کی بچت ہے۔انھوں نے ای کورٹس اور سپریم کورٹ میں جدید ٹیکنالوجی متعارف کرنے میں مدد دینے پر نادرا،کامسیٹس  اور امریکی ادارہ انصاف کا شکریہ بھی ادا کیا۔

مزید : قومی


loading...