مشترکہ پارلیمنٹ کے اجلاس سے اپوزیشن کے 30 ممبر کہاں چلے گئے؟ مسلم لیگ ن کے رہنما مصدق ملک نے اندر کی بات بتادی

مشترکہ پارلیمنٹ کے اجلاس سے اپوزیشن کے 30 ممبر کہاں چلے گئے؟ مسلم لیگ ن کے ...
مشترکہ پارلیمنٹ کے اجلاس سے اپوزیشن کے 30 ممبر کہاں چلے گئے؟ مسلم لیگ ن کے رہنما مصدق ملک نے اندر کی بات بتادی

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) اپوزیشن کے مشترکہ اجلاس کے دوران قانون سازی کے موقع پر اپوزیشن کے 30 ووٹ غائب ہوگئے تھے جس پر اب مسلم لیگ ن کے رہنما مصدق ملک کا موقف آگیا اور انہوں نے بتایا کہ ہم نے سر کی بازی لگا لی تھی لیکن دھڑ غائب ہوگئے ، اس دفعہ ہم تحقیقات کریں گے اوراگر کوئی گفتگو کرے تو اس پر نیب کا مقدمہ بن جاتا ہے ۔ 

نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں ان سے کہا  کہ اپوزیشن کا کام ہی یہی ہوتا ہے کہ اس طرح کی قانون سازی ہوتی ہے تو آپ نے سر دھڑ کی بازی لگا کر روکنا ہے ،  آپ کے پاس جوائنٹ سیشن میں اکثریت تھی، 30 آپ کے پارلیمنٹیرینز آتے نہیں  اور پھر وہی کہتے ہیں کہ صادق سنجرانی والا جو ووٹ آف لو کانفیڈنس والا سکرپٹ دہرایاگیا، کچھ ایسی اطلاعات بھی ہیں کہ آپ کے لوگوں کو نامعلوم کالز بھی آئیں، اگر آپ پارلیمنٹیرینز  بنیادی حقوق کا تحفظ نہیں کرسکتے تو  استعفیٰ دے کر گھر جائیں، معذرت کے ساتھ اتنے جوش مار کر تقریر کررہے ہیں کہ یہ ہوگیا، وہ ہوگیا، فیلیئر تو آپ کے اینڈ پر ہے۔ جس پر مصدق ملک کا کہناتھاکہ کہہ تو میں آپ کو بھی سکتا ہوں، بات یہ ہے کہ سر کی بازی تو لگادی تھی دھڑ غائب ہوگیا، یہ ہوا ہمارے ساتھ، یہ جو ابھی آپ نے حتمی شکل دی ہے اس قانون کو جس کے تحت آپ  نگرانی کرسکتے ہیں، ویڈیوز بناسکتے ہیں، اگر آپ انفرادی پین انفلکٹ کرنا چاہیں جیسا کہ آپ نے دیکھا ۔

اس پر اینکر کامران یوسف نے کہا کہ   آپ سوال پر نہیں آرہے، ممبر کہاں چلے گئے؟ جس پر مصدق ملک نے موقف اپنایا کہ  اس دفعہ 30 کی تو ہم تحقیقات کریں گے، میں وہ بتارہا ہوں جو ہوتا ہے۔ جب آپ کے پاس انفرادی طور پر پین انفلکٹ کرنے کے لیے ٹولزہوں، اور آپ کسی کو انفرادی طور پر جاکردکھائیں کہ اس کے پارلیمان میں ایک خاص طریقے سے ووٹ کرنے کے نتائج  کیا ہوں گے  جو اس حکومت کا وطیرہ ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ذرا کوئی گفتگو کرے تو آپ نیب کا پرچہ کردیتے ہیں، اٹھا کر لے جاتے ہیں، بیٹیوں پر مقدمات کردیتے ہیں، بیٹوں پر مقدمات کردیتے ہیں، بیگم پر مقدمات کردیتے ہیں۔

مزید :

قومی -