’ہم اپنے باپ کو اس لئے کمرے میں بند رکھتے ہیں کیونکہ۔۔۔‘ سعودی بہن بھائیوں کی جانب سے باپ کو تالے میں رکھنے کی ویڈیو پر ہنگامہ لیکن آگے سے انہوں نے اس حرکت کی ایسی وجہ بتادی کہ کوئی سوچ بھی نہ سکتا تھا

’ہم اپنے باپ کو اس لئے کمرے میں بند رکھتے ہیں کیونکہ۔۔۔‘ سعودی بہن بھائیوں ...

جدہ (مانیٹرنگ ڈیسک)ایک چھوٹے سے کمرے میں اپنے باپ کو زنجیروں سے باندھ کر رکھنے والے سعودی بہن بھائیوں نے مظلوم باپ کی ویڈیو سامنے آنے پر شرمندہ ہونے کی بجائے الٹا اپنی افسوسناک حرکت کا دفاع کرتے ہوئے اس کا جواز بھی پیش کردیا ہے۔

سعودی گزٹ کی رپورٹ کے مطابق معمر شخص کے بیٹے اور بیٹیوںکا کہنا ہے کہ ان کا والد دماغی بیماری الزائمر کا شکار ہے اور وہ نہیں چاہتے کہ آزادانہ گھومتے پھرتے ان کے ساتھ کوئی حادثہ پیش آجائے لہٰذا انہیں کمرے میں زنجیروں کے ساتھ باندھ دیا۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ وہ سماجی اورمالی مجبوریاں کے باعث اپنے والد کو اپنے ساتھ نہیں رکھ سکتے۔

’میری سعودی بیوی کو دہشتگرد قرار دے کر شام میں قید کرلیا گیا، اسے زمین کے کئی منزلیں نیچے رکھا گیا تھا لیکن بالآخر کئی ماہ کی کوشش کے بعد اس طریقے سے اسے جیل سے بھگا کر سعودی عرب لانے میں کامیاب ہوگیا‘

معمر شخص کی ایک بیٹی نے المدینہ ڈیلی سے بات کرتے ہوئے کہا ”جو کہانی دنیا کو دکھائی جارہی ہے وہ مکمل نہیں ہے۔ میرے والد الزائمرز کے مریض ہیں اور انہیں نفسیاتی مسائل کا بھی سامنا ہے۔ ان کی عمر 90 سال ہے۔ ہم نے ایک سال قبل انہیں کمرے میں بند کرنا شروع کیا۔ ایک بار وہ کار حادثے کا بھی شکار ہوئے۔ اکثر اوقات وہ باہر جاتے ہیں تو واپسی کاراستہ بھی بھول جاتے ہیں۔ ان واقعات سے پریشان ہوکر ہم نے انہیں کمرے میں باندھنا شروع کردیا۔ “ان کا مزید کہنا ہے کہ چونکہ ان کا والد سعودی نہیں ہے لہٰذا وہ اسے وزارت محنت و سماجی ترقی کے سوشل کیئر ہوم میں بھی نہیں رکھ سکتے۔

سوشل میڈیا صارفین ان بہن بھائیوں پر تنقید جاری رکھے ہوئے ہیں۔ تنقید کرنے والوں کا کہنا ہے کہ نوے سال کے بزرگ کو کسی بھی بنیاد پر زنجیروں سے باندھنا غیر انسانی فعل ہے۔ یہ سوال بھی اٹھایا جا رہا ہے کہ آخر کونسی ایسی سماجی اور مالی مجبوریاں کہ اس انتہائی ضعیف شخص کی اولاد اسے اپنے ساتھ رکھنے سے معذور ہے۔

مزید : عرب دنیا

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...