پڑھو پنجاب بڑھو پنجاب جہالت کے اندھیروں سے روشنی کے میناروں تک

پڑھو پنجاب بڑھو پنجاب جہالت کے اندھیروں سے روشنی کے میناروں تک

عبدالرؤف اعوان

بہترین قوموں کا وجود ہمیشہ سے تعلیم پر ہی منحصر رہا ہے اور کسی بھی ملک کی ترقی اورخوشحالی کی منزل کے حصول کا واحد راستہ تعلیم ہے ۔قوم کو جہالت کے اندھیروں سے نکال کر نور ،روشنی اورزندگی کی طرف لے جانے کیلئے حکومتوں کو مرکزی کردارادا کرنا ہوتاہے۔یہ حکومتوں کی ہی ذمہ داری ہے کہ بچوں کی انرولمنٹ کو یقینی بنائے اورپنجاب میں چائلڈ پروٹیکشن اتھارٹی کا قیام بھی اس مقصد کے حصول میں نمایاں کردار ادا کررہا ہے۔بھٹوں ،ہوٹلوں اورورکشاپس وغیرہ سے معصوم بچوں کو تعلیم کی غرض سے اسکولوں میں داخلہ کرانا ،اس ادارے کی اولین ترجیحات میں شامل ہے۔پنجاب حکومت ایسے بچوں کی تعلیم کے تمام اخراجات اٹھارہی ہے،ان کی فیملی کو بھی گرانٹ دیتی ہے تاکہ بچوں کی تربیت و پرورش بہترین ہوسکے۔انڈوومنٹ فنڈ کا قیام بھی اسی سلسلے کی ایک؂کڑی ہے۔پنجاب بھر میں خادم پنجاب سکولز پروگرام کے تحت کل سکول329 ہیں جبکہ زیرتعمیر سکولوں کی تعداد 234ہے۔خادم پنجاب سکولز پروگرام کے تحت نئے کلاس رومز، باتھ رومز ، چار دیواری کی تعمیر، فرنیچر، بجلی وغیرہ کی فراہمی کی دستیابی ممکن بنائی جارہی ہے۔تفصیل کے مطابق 324سکولوں میں 658کمروں کی تعمیر کا منصوبہ جاری ہے۔خادم پنجاب سکولز پروگرام کے تحت تحصیل ملتان، شجاع آباد، جلالپور پیروالا، خانیوال، لودھراں اور وہاڑی کے لئے 2ارب 31 کروڑ 51لاکھ 68ہزار روپے کی منظوری سے مجموعی طور پر 1202 کلاس رومز کی فراہمی کا منصوبہ جاری ہے۔خانیوال میں 232، لودھراں میں 116، ملتان 658، وہاڑی میں 196 اضافی کلاس رومز کی تعمیر کا منصوبہ جاری ہے۔بچیوں کی شرح خواندگی میں اضافہ روز اول سے ہی حکومت پنجاب کی اولین ترجیح رہی ہے۔ خادم اعلی زیور تعلیم پروگرام کا مقصدایسے والدین کی بچیوں کے لئے مالی معاونت فراہم کرنا ہے جوشب وروز رزق حلال کی تگ ودو کے باوجود اپنی بچیوں کو پڑھانے کی مالی سکت نہیں رکھتے۔تعلیمی وظائف کا یہ پروگرام ملک میں اپنی نوعیت کا سب سے بڑا پروگرام ہے جس سے16اضلاع میں چار لاکھ ساٹھ ہزار سے زائد طالبات مستفید ہوں گی (چھٹی سے دسویں جماعت تک میں زیر تعلیم )۔آپ کو یہ جان کر بے حد خوشی ہو گی کہ سرکاری سکولوں میں زیر تعلیم طالبات کے لئے ماہانہ وظیفہ 5گنا بڑھا دیا گیا ہے اور بچیوں کو ماہانہ200روپے کی بجائے1000روپے سکالر شپ دیا جائے گا جس کے لئے 6 ارب سالانہ مختص کئے گئے ہیں۔مجھے یقین ہے کہ زیور تعلیم پروگرام کی وجہ سے سکولوں میں بچیوں کی تعداد میں اضافہ ہو گا۔ جوں جوں طالبات کی تعداد بڑھے گی اسی حساب سے وظائف کی مد میں بجٹ مختص کیا جائے گا۔وظائف کے لئے ایسے اضلاع کا انتخاب کیا گیا ہے جہاں شرح خواندگی پنجاب کے دوسرے اضلاع سے کم ہے۔ زیادہ تر اضلاع کا تعلق جنوبی پنجاب سے ہے۔(راجن پور،ڈیرہ غازی خان،بہاولنگر،بہاولپور،مظفرگڑھ،پاکپتن شریف،بھکر،چنیوٹ،جھنگ،خانیوال ،لیہ ،وہاڑی،رحیم یار خان،لودھراں،قصور،اوکاڑہ۔یوں تعلیمی طور پر پسماندہ اضلاع سے تعلق رکھنے والی بچیوں کوتعلیم کے مساوی مواقع حاصل ہوں گے۔میں یہاں اس بات کا ذکر کرنا ضروری سمجھتا ہوں کہ زیور تعلیم پروگرام روایتی طرزکا پراجیکٹ نہیں بلکہ سوفیصد شفافیت کو یقینی بنانے کے لئے اے ٹی ایم طرز کے خدمت کارڈ جاری کئے جارہے ہیں جن کے ذریعے سہ ماہی بنیاد پر ماہانہ وظیفہ کسی بھی بنک سے نکلوایا جا سکتا ہے۔جس سے ڈاک خانے کے منی آرڈرسسٹم میں ہونے والی تاخیرکا سدباب بھی کیا جاسکے گا اور اس سے وظائف کی فراہمی بہتر ہو گی ۔ برانچ لیس بنکنگ حکومت پنجاب کا گڈ گورننس کی طرف ایک اور عملی قدم ہے۔پنجاب حکومت کہ یہ خواہش ہے کہ طا لبات کی انرولمنٹ میں ناصرف اضافہ ہو بلکہ ڈراپ آؤٹ کی شرح میں بھی بہتری آئے اور اس کے ساتھ ساتھ شفافیت اور معیار تعلیم کی بہتری کے لئے سکالرشپ کا اجراء طالبات کی سکول میں 80فیصد حاضری سے مشروط کیا گیا ہے اوراٹنڈنٹس کو یقینی بنانے کے لئے کمپیوٹرائزڈ سسٹم کا استعمال کیا جائے گا ۔زیور تعلیم پروگرام کے تحت بچیوں میں غذائی ضروریات اور صحت کا شعور بھی اجاگر کیا جارہا ہے۔میں سمجھتا ہوں کہ بچیوں کی شرح خواندگی میں اضافے سے مسابقت کی فضا پیدا ہو گی۔پنجاب کے90فیصدگرلزسکولوں میں ضروری سہولتوں کی فراہمی کا پراجیکٹ مکمل،2018تک تمام گرلز سکولوں میں ضروری سہولتوں کی فراہمی کا ہدف مقرر کیا گیا ہے۔ہر ضلع میں کم از کم ایک گرلز کالج میں ہوسٹل کی سہولت،کالجز کو 275بسوں کی فراہمی کا منصوبہ بھی شامل ہے۔14اضلاع میں محروم معیشت بچیوں کے لئے دانش سکول میں اعلی تعلیم کا اہتمام کیا جارہا ہے۔119313طلبہ کے لئے پیف سکالرز شپ کا حصول ممکن بنایا جارہا ہے۔طالبات کے لئے دنیا کے بہترین تعلیمی اداروں میں پی ایچ ڈی،ایم فل اور ایم اے کے لئے چیف منسٹر پنجاب کے خصوصی سکالر شپس کے مساوی مواقع فراہم کیئے جارہے ہیں۔حکومت پنجاب کو یہ منفرد اعزاز حاصل ہے کہ وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کی زیر قیادت پنجاب انڈوومنٹ فنڈ دنیا میں اپنی نوعیت کا اور17ارب مالیت پر مشتمل پاکستان کی تاریخ کا سب سے بڑا اسکالر شپ پنجاب انڈومنٹ فنڈ زورو شور سے جاری ہے اور ابھی تک 7.5ارب روپے سے 150,000اسٹوڈنٹس میں اسکالر شپ تقسیم کی جا چکی ہے۔اس ادارے کا بنیادی مقصد ذہین اور مستحق طلباء تک اسکالر شپ پہنچانا ہے تاکہ وہ اپنی تعلیم میں حائل کسی بھی قسم کی رکاوٹ کو آسانی سے دور کر سکیں اور اسکالر شپ کے حصول کے بعد پاکستان کے بہترین مستقبل کی جانب ترقی کا سفر جاری رکھ سکیں۔ انٹر سے لیکر ماسٹر لیول تک اعلیٰ نمبروں سے پاس ہونیوالے ذہین اور مستحق طلباء کو اسکالر شپ ان کے گیٹ پر فراہم کی جا رہی ہے۔ہائر ایجوکیشن کے لئے نہ صرف پنجاب بلکہ آزاد کشمیر،فاٹا،گلگت بلتستان اور اسلام آباد کے اسٹوڈنٹس بھی اس پروگرام سے استفادہ کر رہے ہیں۔اس ادارے کا بنیادی مقصد ضرورت مند طلباء کی فنانشل سپورٹ کرنا ہے ۔شہباز شریف میرٹ اسکالر شپ پروگرام کے تحت 33بہترین طلباء دنیا بھر کی بہترین یونیورسٹیوں میں اعلیٰ تعلیم کے حصول روانہ ہوچکے ہیں۔ابھی تک جنوبی پنجاب کے 11اضلاع ڈیرہ غازیخان،رحیم یار خان،بہاولپور،مظفر گڑھ، لودھراں، بہاولنگر، راجن پور، چنیوٹ،وہاڑی،بھکر اور لیہ میں ایک ارب روپے کی مالیت سے انٹر میڈیٹ کی ہونہار طالبات کے لئے 26,000سے زائد خصوصی وظائف کا اجراء مکمل کیا جا چکا ہے۔ پنجاب حکومت نے دوردراز اورپسماندہ علاقوں کے ساڑھے چار ہزار سکولوں کو آؤٹ سورس کیا ہے، جن کی بدولت ان سکولوں میں طلباء و طالبات کی تعداد دو گنا ہوگئی ہے ۔ پنجاب حکومت نے صوبے میں میرٹ اورشفافیت کی پالیسی پر عملدر آمد کو یقینی بنایاہے اورگزشتہ 8سالوں کے دوران 2لاکھ سے زائد اساتذہ میرٹ کی بنیاد پر بھرتی کیے گئے ہیں اورکوئی بھرتی کیے گئے ان اساتذہ میں کسی ایک پر بھی سفارش یارشوت کا الزام نہیں لگاسکتا۔پنجاب حکومت نے ہر سطح پر میرٹ کو فروغ دیا ہے ۔ اس سال بھی 80ہزار اساتذہ میرٹ کی بنیاد پر بھرتی کیے جارہے ہیں جن میں 50فیصد سے زائد خواتین اساتذہ شامل ہیں ۔ سکولوں میں 50ہزار ٹیبلٹس کی فراہمی کا پروگرام بھی جاری ہے اورسینٹر آف ایکسیلنس بھی بنائے گئے ہیں۔حکومت پنجاب نے محنت کشوں ،کسانوں کو عزت دی اورغریب خاندانوں کے بچے اوربچیوں کو زیور تعلیم سے آراستہ کرنے کیلئے بے مثال اقدامات کیے ہیں۔ بلاشبہ وزیراعلیٰ پنجاب شہبازشریف نے قوم کے بچے اوربچیوں کو زیور تعلیم سے آراستہ کرنے کیلئے شاندار پروگرام شروع کر کے خوشحال پاکستان کی بنیاد رکھ دی ہے ۔ایوان اقبال لاہور میں سکولوں میں بچوں کی داخلہ مہم 2017ء کے افتتاح کے موقع پر ایک شاندار تقریب کا آغاز کیا گیا جسکے مہمان خصوصی وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف تھے۔انہوں نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بچوں کے سکولوں میں سو فیصد داخلے کو یقینی بنانے کیلئے محنت،عزم اورجذبے کے ساتھ کام کرتے ہوئے اس چیلنج کو پورا کرنا ہے۔ پنجاب حکومت کے وسائل قوت اورکاوش موجود ہے اللہ کو منظور ہوا تو اس ہدف کو ضرور حاصل کریں گے۔

مزید : ایڈیشن 2

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...