مریضوں کو طبی سہولیات کی فراہمی کے لئے ہنگامی بنیادوں پر کام ہو نا چاہیے

مریضوں کو طبی سہولیات کی فراہمی کے لئے ہنگامی بنیادوں پر کام ہو نا چاہیے

ڈاکٹر عبدالنعیم نوشاد نے طب کی دُنیا میں اپنی دن رات کی محنت اور کاوشوں کی بدولت ایک ایسے شعبے میں مہارت حاصل کی ہے، جس میں انسانی جسم میں سوئی چبھنے سے لے کر کینسر تک یعنی جملہ بیماریوں کا علاج کیا جاتا ہے۔ اس جدید طریقہ علاج کو ’’ پینمینجمنٹ‘‘ کہا جاتا ہے۔

ڈاکٹر عبدالنعیم نوشاد 1993ء سے امریکہ میں مقیم ہیں،۔۔۔ 1993ء سے2000ء تک امریکہ سے صحت کے مختلف شعبوں میں مہارت حاصل کی، بالخصوص ’’ہارٹ سرجری‘‘ اور ’ پین مینجمنٹ‘‘ میں امریکہ کے بہترین تعلیمی اداروں سے تعلیم حاصل کی، ان میں انڈیانا یونیورسٹی اور سکول آف میڈیسن قابلِ ذکر ہیں، اس کے بعد امریکہ ہی کے ایک ہسپتال میں ملازمت اختیار کر لی اور آج اپنی محنت اور لگن کی بدولت اس مقام پر ہیں کہ امریکہ میں ان کے چھ ہسپتال ہیں، ان ہسپتالوں میں انسانی جسم کی جملہ بیماریوں کا علاج کیا جاتا ہے ،جبکہ قطر، (دوحہ) اور سعودی عرب میں بھی ہسپتالوں کے پراجیکٹس پر کام ہو رہا ہے۔

ڈاکٹر عبدالنعیم نوشاد پاکستان میں صحت کے شعبے میں جوخدمات انجام دے رہے ہیں،وہ کسی تعارف کی محتاج نہیں۔ڈاکٹرصاحب جدید ترین ٹیکنالوجی پاکستان لے کر آئے ہیں اور پاکستان میں جوہر ٹاؤن میں 465 G3کھوکھر چوک میں ’’ایڈوانسڈ پین سنٹر‘‘ بنایا ہے: ۔

انہوں نے کہاہم پچھلے 15 سالوں سے امریکہ میں بغیر اپریشن بہت سی بیماریوں کے علاج کی سہولیات فراہم کر رہے ہیں۔ امریکہ میں ہم گزشتہ کئی سالوں سے مہروں ، گھٹنوں ، پٹھوں، آرتھرائٹس، کینسر، شوگر ، فالج اور بہت سی دائمی بیماریوں کے علاج کی سہولت مہیا کر رہے ہیں۔ ایڈوانسڈ پین سنٹر کو پاکستان میں شروع کرنے کا مقصد یہاں کے لوگوں کو بہترین اور جدید کوالٹی کا علاج فراہم کرنا ہے۔ تا کہ پاکستان کے لوگ بھی جدید ریسرچ اور طریقہ کار سے مستفید ہو سکیں۔ ہمارا اصل مقصد بیماریوں کی صحیح تشخیص ہے۔ تا کہ اصل وجہ اور مسئلے کو تلاش کیا جا سکے۔ اس کے بعد بیماری کا اصل علاج ہے اور اگلے مرحلے میں ہم بیماری سے بچاؤ کا طریقہ بھی بتاتے ہیں۔ اس وقت ہم متعدد بیماریوں کا علاج کر رہے ہیں۔ مہروں اور ڈسک سلپ ہونے کی وجہ سے بیماریوں کا علاج، گردن سے درد نکل کر بازواور ٹانگوں میں جانا، کمر کے نچلے حصے سے درد کا نکل کر ٹانگوں اور پاؤں کی انگلیوں میں جانا، ہاتھ اور پاؤں کا سن ہونا،سر درد، حرام مغز کی انجری،آٹو امیون بیماریوں کا علاج، مزید بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہم بہت سی جدید سہولیات فراہم کر رہے ہیں۔جس کی بدولت اب مریض کو اپریشن کی ضرورت نہیں پڑتی۔ یہ سنٹر اپنی نوعیت کا پہلا سنٹر ہے۔ جہاں تمام علاج جیسا کہ نیچرل میڈیکیشن، ری جنریٹو میڈیسن جیسی تمام سہولیات فراہم کی جاتی ہیں۔ مزید انہوں نے کہا کہ اب پاکستان میں بھی یہ سہولیات موجود ہیں۔ اور ایڈوانسڈ پین سنٹر میں جدید مشینری اور آلات کو وقت کے ساتھ ساتھ ہی منگوایا جاتا ہے۔ امریکہ میں نئی چیزیں بنانا اور نئی ایجادات کرناعام باتیں ہیں اور مزید بتایا کہ دس سال سے لوگ امریکہ اور کوریا میں سٹیم سیلز پر ریسرچ کر رہے ہیں۔ گھٹنوں کے مسائل کے لیے سرجری کے بارے میں انہوں نے بتایا کہ سرجری ہی واحد حل نہیں بلکہ گھٹنوں کے مسائل اور دیگر طریقوں سے بھی حل کئے جا سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کوالٹی کے مقابلے میں ہماری سہولیات امریکہ کے بارے میں کچھ کم ہیں۔ مگر ہم پوری کوشش کر رہے ہیں کہ ہم لوگوں کو بین الاقوامی سطح کا علاج مہیا کریں۔ انہوں نے یورپ اور امریکہ کے علاج کے بارے میں بتایا کہ وہاں سب سے پہلے بیماری کی جڑ کو دیکھا جاتا ہے۔ جس کو ڈائیگناسس کہا جاتاہے۔ اس عمل میں بیماری کی اصل وجہ تک پہنچا جاتا ہے کہ دردکی اصل وجہ کیا ہے۔ مثال کے طور پر کمر درد کی صورت میں پٹھوں کا مسئلہ تو نہیں یا پھر کوئی اور کمزوری تو نہیں۔ اس کے بعد دوسرا قدم ٹریٹمنٹ پلان ہے۔ انہوں نے کہا کہ سرجری کی صورت میں نا امید ہونے کی ضرورت نہیں ہوتی۔ اور ان کی خدمات کا بنیادی مقصد بین الاقوامی سطح کی بہترین سہولیات فراہم کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ فلوروسکوپ مشین ایک خاص قسم کا کیمرہ ہے۔ جس کی مدد سے انجیکشن لگایا جاتا ہے تا کہ اثر پذیری ذیادہ ہو۔ انہوں نے بتایا کہ جوڑوں کا مسئلہ پوری دنیا میں عام ہے۔ انسانی جسم ایک گاڑی کی مانند ہے۔ جس طرح گاڑی بغیر شاک کے اچھی طرح نہیں چل سکتی۔ اسی طرح انسانی جسم بغیر ڈسک کے کچھ بھی نہیں۔ انہوں نے بتایا کہ ہمارے پاس ایسی جدید مشینیں ہیں جس کی مدد سے ہم مریض کی جلد کو سن کرتے ہیں۔ اور پھر اس کا علاج کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گھٹنوں کا درد عمر کے بڑھنے کے ساتھ ساتھ بڑھتا ہے جس کی بنیادی وجہ گھٹنوں میں سے گریس کا کم ہو جانا ہے۔ اورہڈی آپس میں رگڑ کھانے لگتی ہے۔ جو کہ تکلیف کا باعث بنتی ہے۔ اس صورت میں انہوں نے بتایا کہ سرجری کے بعد بھی اگر کسی مریض کو شکایت ہو توان کے علاج سے 60 فیصد تک آرام آ جاتا ہے۔ ایڈنسڈ پین سنٹر میں ہمارا مقصد درد کے مریضوں کو جدید اور جامع طریقہ علاج مہیا کرنا ہے۔ جو Evidence based اور ریسرچ سے ثابت ہے۔ ہمارا بنیادی مقصدمریض کا یقین ، سہولت اور بہترین علاج ہے۔ ری جنریٹو میڈیسن اکیسویں صدی کا جدید ترین علاج ہے۔ جس میں جوڑوں ، پٹھوں ، رگوں اور خلیوں کی دوبارہ نشونما کی جاتی ہے۔ اور جسم میں شکست و ریخت کے عمل کو روکا جاتا ہے۔ جب آپ میڈیسن، فزیو تھراپی، حکماء اور ہومیو پیتھک سے علاج کرواکے مایوس ہو جاتے ہیں تو آپ کو اپریشن آپکے مسئلے کا آخری حل نظر آتا ہے۔ لیکن اب درحقیقت ریسرچ سے یہ بات ثابت ہو رہی ہے۔ کہ ان تمام بیماریوں کا علاج Regenerative Medicine سے ممکن ہے۔ انسانی جسم میں عمر کے بڑھنے کے ساتھ ساتھ جوڑ اور پٹھے کمزوری کا شکا ر ہو جاتے ہیں۔ اور مسلسل بیماری کی وجہ سے قوت مدافعت میں بھی خاصی کمی آتی ہے۔ تمام ادویات، وٹامنز سپیلمنٹس اور سٹیرائیڈز انجیکشن ایک عارضی آرام فراہم کرتے ہیں۔ لیکن اندرونی جسمانی نقصان کو بھی ٹھیک نہیں کر سکتے۔ نیتجتاًَ آپ کو یہ عمر بھر استعمال کرنا پڑتی ہے۔ قدرت نے ہمارے جسم میں صلاحیت رکھی ہے کہ جب بھی ہمیں چوٹ یا کوئی نقصان پہنچتا ہے۔ تو وہ خود بخود ٹھیک ہونا شروع ہو جاتا ہے۔ یہ تمام عمل جسم میں موجود سیلز کرتے ہیں۔ جب ہم درد کے لیے پین کلرز کھاتے ہیںیا سٹیرائیڈز لیتے ہیں۔ ان سب کی وجہ سے نشونما کا یہ قدرتی عمل رک جاتا ہے۔ اور چوٹ یا نقصان دائمی درد میں بدل جاتا ہے۔ یہ سٹیم سیل ہمارے جسم میں پیدائش کے وقت سے موجود ہوتے ہیں لیکن عمر اور بیماری کی وجہ سے ان میں نمایاں کمی واقع ہوتی ہے۔ اور بعض اوقات یہ تعداد اتنی کم ہو جاتی ہے تو یہ توڑ پھوڑ کے عمل کو نہ تو روک پاتے ہیں اور نہ ہی نشونما کرواپاتے ہیں۔ اس کے نتیجے میں مریض دائمی درد میں مبتلا ہو جاتا ہے۔ ہم خاص طور پر گھٹنوں کے osteoarthritis کے لیے جدید اور جامع طریقہ علاج مہیا کرتے ہیں۔ جس کی وجہ سے اپریشن کروانے کی ضرورت نہیں پڑتی۔ اور تین سے چار ماہ میں جوڑ بالکل درست ہو جاتا ہے۔ اور آپ اپنی زندگی سے دوبارہ لطف اندوز ہو ے لگ جاتے ہیں۔

مستقبل کی پلاننگ سے متعلق بتاتے ہوئے انہوں نے کہا کہ میری خواہش ہے، پاکستان میں تحصیل کی سطح پر ہسپتال بنائے جائیں۔ اس مقصد کے لئے حکمت عملی ترتیب دے رہا ہوں۔ اس کے علاوہ فارما سیوٹیکل کمپنی بنانے کا ارادہ ہے تاکہ پاکستان میں لوگوں کو اچھی اور معیاری ادویات کی فراہمی ممکن ہو سکے۔

حکومت جس طرح دیگر ترقیاتی کاموں کی طرف اپنی توجہ مرکوز کئے ہوئے ہے ، اسی طرح بنیادی مراکز صحت کی طرف بھی توجہ مرکوز کرے۔

مُلک بھر میں بنیادی مراکز صحت تحصیل کی سطح تک موجود تو ہیں، ہر ضلع میں ہسپتال بھی ہیں، تاہم انہیں اپ گریڈ کرنے کی ضرورت ہے، خاص طور پر بنیادی مراکز صحت کو فعال بنایا جائے، وہاں معیاری ادویات اور جدید مشینری کی دستیابی کو یقینی بنانے کے ساتھ ساتھ ڈاکٹروں کی موجودگی کو بھی ہر صورت یقینی بنایا جائے۔ بنیادی مراکز صحت کو فعال بنانے کے لئے حکومت کو مخیر حضرات کی مدد بھی لینی چاہئے۔ صحت کے میدان میں ترقی کے لئے فنڈز مہیا کرنے، جامع منصوبہ بندی اور ٹھوس اقدامات کی ضرورت ہے۔میرا مشن ہے کہ پاکستان کے تمام لوگوں کو طبی سہولیات میسر کروں اور اللہ پاک کی مدد شاملِ حال رہی، تو اس مشن کو ضرور پورا کروں گا،یہ راستہ مشکل ہے، لیکن میں سمجھتا ہوں کہ نیت ٹھیک ہو تو پھر ہر کام ہو جاتا ہے۔

***

مزید : ایڈیشن 2