رواں سال کپاس کی بہتر قیمت ملنے کی امید پیدا ہوگئی:رانا افتخار

رواں سال کپاس کی بہتر قیمت ملنے کی امید پیدا ہوگئی:رانا افتخار

لاہور (کامرس رپورٹر) انجمن کاشتکاروں پنجاب کے صدر رانا افتخارنے کہا ہے کہ اس سال کپاس کی بہتر قیمت ملنے کی امید پیدا ہوگئی ہے ۔کپاس کی قیمت 4000روپے فی من ہو گی جو ماضی کی قیمت سے زیادہ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ زراعت نے کپاس کی بہتر پیداوار کے لیے ٹھوس اقدامات کئے جن کے بہترین نتائج برآمد ہوئے ۔ گلابی سنڈی کے خاطر خواہ تدارک اور بڑھتے ہوئے درجہ حرارت کے پیش نظر محکمہ زراعت نے کپاس کی 15اپریل سے قبل کاشت پر عائد پابندی اٹھا لی ہے ۔ زیادہ سے زیادہ رقبہ پر کپاس کی کاشت کرنے کے لیے محکمہ زراعت نے ٹھوس اقدامات کئے ہیں اور آف سیزن مینجمنٹ فارمولا پر عمل کرنے کے لیے کاشتکاروں کو ہر ممکن ترغیب دی گئی ہے ۔ کپاس کی زیادہ سے زیادہ رقبہ پر کاشت کی مہم ماہرین اور سائنسدانوں کی مشاورت سے شروع کی گئی ہے اور انہیں کی مشاورت سے مہم کو نئے موڑ دیے گئے ہیں۔کپاس کے کاشتکاروں کے لیے 23نکات مربت کیے گئے ہیں۔ اس کے علاوہ گلابی سنڈی سے متاثرہ 500من ٹینڈے تلف کر دیے ۔ محکمہ زراعت کی کیڑوں سے متاثرہونے والی کپاس کے ٹینڈوں کو تلف کرنے کی مہم میں طالب علم ، زرعی ادویات کے کاروبار سے وابستہ افراد ، محکمہ زراعت کے ملازمین اور کسانوں نے حصہ لیا۔

جبکہ جننگ فیکٹری، بھٹہ اور آئل فیکٹری مالکان کو فوری طور پر جننگ ویسٹ ختم کرنے کی ہدایت کی گئی ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ کپاس کو خطرناک کیڑوں سے بچانے کے لیے دوست کیڑوں کی مفت فراہمی بھی یقینی بنائی جارہی ہے جبکہ کاشتکاروں کو کپاس کے بارہ خطرناک کیڑوں سے بھی آگاہ کر دیا گیا ہے ۔ جڑی بوٹی مکاؤ پیداوار بڑھاؤ مہم کامیابی سے چلائی گئی ۔ اس طرح بائیو لوجیکل کنٹرول متعارف کرایا گیا۔#/s#

مزید : کامرس

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...