پھل دار پودوں کی بار آوری تک باغات میں سبزیات و دیگر اجناس کاشت کی جائیں، محکمہ زراعت پنجاب

پھل دار پودوں کی بار آوری تک باغات میں سبزیات و دیگر اجناس کاشت کی جائیں، ...

راولپنڈی (اے پی پی)محکمہ زراعت پنجاب نے کہا ہے کہ پھل دار پودے بارآورہونے تک ان میں ٹینڈا ، کدو، کریلا ، پیاز، بھنڈی،پھول گوبھی، مولی، گاجر اور خربوزہ کے علاوہ پھلی دار اجناس مونگ، ماش ،موٹھ اور رواں جبکہ چاروں میں گوارا اور جنتر کاشت کریں۔ ان فصلوں کی کاشتہ پودوں کی صحت اور بڑھوتری پر اچھا اثر پڑتا ہے کیونکہ باغ جڑی بوٹیوں سے صاف رہتے ہیں اور زمین کی حالت بھی بہتر رہتی ہے۔اگر باغات میں فصلیں کاشت نہ کی جائیں تو ان میں گوڈی کرنے اور جڑی بوٹیوں کو تلف کرنے کے لیے بار بار ہل چلانا پڑتا ہے جو کہ باغبانوں پر اخراجات کی صورت میں بوجھ بن جاتا ہے ۔

ترجمان نے مزید کہا کہ شروع میں پھل دار پودے اتنے بڑھے نہیں ہوتے اور ساری زمین کو نہیں گھیرتے اس لیے ان پودوں کے درمیان دوسری نفع آور فصلیں بآسانی اگائی جاسکتی ہیں۔فصلوں کی کاشت کے وقت یہ خیال رکھیں کہ پھل دار پودوں کے تنوں کے گرد کافی جگہ خالی چھوڑ دیں تاکہ فصل کی جڑیں ان پھل دار پودوں کی جڑوں کی بڑھوتری میں رکاوٹ پیدا نہ کریں اور نہ ہی خوراک حاصل کرنے میں ان کا مقابلہ کریں۔اگر باغات شہر یا فصلوں کے قریب ہوں توباغات میں سبزیوں کی کاشت آمدنی کے حصول کے لیے زیادہ سود مند ہے۔

مزید : کامرس

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...