مسلم لیگ ن کے اقتدار کی جان پولیس کے طوطے میں ہے:عوامی تحریک

مسلم لیگ ن کے اقتدار کی جان پولیس کے طوطے میں ہے:عوامی تحریک

لاہور(خصوصی رپورٹ)پاکستان عوامی تحریک کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات نوراللہ صدیقی نے اپوزیشن رکن صوبائی اسمبلی عامر سلطان چیمہ اور انکے بیٹے کیخلاف فائرنگ کے جھوٹے مقدمے کے اندراج کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ دنیا کے کسی اور ملک میں ریاستی ادارے پولیس کو سیاسی مخالفین کیخلاف استعمال نہیں کیا جاتا۔ حکمران سیاسی مخالفین سے جینے کا حق چھین رہے ہیں، ن لیگ کے اقتدار کی جان پولیس کے طوطے میں ہے۔ 17 جون14 ء کے دن حکمرانوں کے ایماء پر پولیس نے 100لوگوں کو گولیاں ماریں جن میں 14 شہید ہو گئے اور 3 سال گزر جانے کے بعد بھی شہداء کے ورثاء کو انصاف نہیں ملا۔ گزشتہ روز اخبار نویسوں سے گفتگو میں انکا مزید کہنا تھا سیاسی استعمال کے باعث بطور ادارہ پولیس کا نظم و نسق تباہ اور عوام کا اس محافظ ادارے سے اعتماد اٹھ گیاہے، اس تمام تر تباہی کے باوجود حکمران پولیس کے سیاسی استعمال سے باز نہیں آرہے۔ پنجاب میں اپوزیشن کی کوئی ایک سیاسی جماعت ایسی نہیں جس کے کارکنوں کو پولیس کے تشدد اور پکڑ دھکڑ کا سامنا نہ کرنا پڑا ہو۔ انتقامی کارروائیوں کی سب سے زیادہ قیمت عوامی تحریک نے چکائی۔14 ء سے لے کر تاحال ہمارے 25 ہزار سے زائد کارکنوں کو گرفتار ،بیشتر کو حبس بے جا میں رکھا گیا۔ 500 سے زائد کارکنوں کیخلاف دہشت گردی کی دفعات کے تحت ،سربراہ عوامی تحریک ڈاکٹر طاہر القادری کیخلاف 40 سے زائد جھوٹے مقدمات قائم کیے گئے۔ عوامی تحریک کے 42 کارکنوں کو شہدائے ماڈل ٹاؤن کے قتل کیس میں نامزد کیا گیا ۔ ن لیگ کے اقتدار کی جان پولیس کے طوطے میں ہے۔

مزید : علاقائی