امریکی بحری بیٹرہ شمالی کوریا سے دور چلاگیا ، بحر ہند کی طرف روانہ

امریکی بحری بیٹرہ شمالی کوریا سے دور چلاگیا ، بحر ہند کی طرف روانہ

واشنگٹن(این این آئی) امریکی بحری بیڑے نے شمالی کوریا کی جانب سفر نہیں کیا تاہم مخالف سمت کی جانب پیش قدمی کرتے ہوئے چلا گیا۔اس سے قبل امریکی نیوی نے کہا تھا کہ طیارہ بردار جہاز یو ایس ایس کارل ونسن کے سٹرائیک گروپ نے ڈیٹرنس اقدام کے طور پر کوریائی جزیرہ نما کی جانب سفر کیا تھا۔لیکن یہ گروپ دراصل اختتام ہفتہ وہاں سے کافی دور تھا، وہ ہرمز سنڈا سے بحرِ ہند جا رہا تھا۔میڈیارپورٹس کے مطابق امریکی پیسیفک کمانڈ نے کہا کہ ان کا سٹرائیک گروپ اب حکم کے مطابق مغربی بحرِ ہند کی جانب سفر کر رہا ہے۔ااسے آسٹریلیا کے ساتھ ٹریننگ مکمل کرنی ہے۔اس سے پہلے اتوار کو شمالی کوریا کے میزائل پروگرام پر خدشات میں اضافے کے باعث امریکی فوج نے بحریہ کے سٹرائیک گروپ کو کوریائی خطے کے جانب پیش رفت کا حکم جاری کیا تھا۔امریکی پیسفک کمانڈ نے اس تعیناتی کو خطے میں تیار رہنے کی حکمت عملی قرار دیا تھا۔برطانوی ٹی وی کے مطابق اب یہ بات واضح نہیں ہے کہ یہ اقدام جان بوجھ کر دیا جانے والا دھوکا تھا جس کا مقصد شاید شمالی کوریا کے رہنما کم جو ان کو خوفزدہ کرنا تھا یا پھر منصوبہ بندی کی تبدیلی۔شمالی کوریا نے حال ہی میں کئی جوہری تجربات کیے ہیں اور ماہرین کا خیال ہے کہ مستقبل میں یہ جوہری اسلحہ بنا سکتا جس میں امریکہ تک مار کرنے کی صلاحیت ہو سکتی ہے۔شمالی کوریا نے اپنے مشرقی ساحل سنپو سے جاپان کے سمندر میں درمیانے فاصلے تک مار کرنے والے بیلسٹک میزائل کا تجربہ کیا تھا۔خیال رہے کہ شمالی کوریا کے جوہری اور میزائل پروگراموں کے تجربات کی وجہ سے امریکہ اور شمالی کوریا کے تعلقات تناؤ کا شکار ہیں۔

مزید : علاقائی