لاہورہائیکورٹ نے22 بھٹہ مزدوروں کو بازیاب کروا کررہاکردیا

لاہورہائیکورٹ نے22 بھٹہ مزدوروں کو بازیاب کروا کررہاکردیا

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہورہائیکورٹ نے22 بھٹہ مزدوروں کوعلاقہ سے بازیاب کرا کررہاکردیا، رہائی پانے والوں میں 8 مرد،3 خواتین اور11 بچے شامل ہیں۔جسٹس ارم سجادگل نے ندیم اختر کی درخواست پرسماعت کی۔وکیل نے مؤقف اختیار کیاکہ بھائی پھیروکے علاقہ میں بھٹہ مالک شیرمحمدڈوگراورطیب ڈوگر نے درخواست گزار کے بیوی بچوں سمیت22افرادکوحبس بے جا میں رکھ کر ان سے جبری مشقت لے رہا ہے اور سرکاری ریٹ کے مطابق اینٹیں بنانے کی اجرت بھی نہیں دی جارہی۔عدالت سے استدعا کی گئی کہ مزدوروں کو بازیاب کرا کر رہا کرنے کاحکم دیاجائے۔عدالتی حکم پر بھائی پھیروپولیس نے بھٹہ مزدورں کوعدالت پیش کیا۔بھٹہ مالک کے وکیل نے عدالت میں مؤقف اختیارکیاکہ مزدوروں سے جبری مشقت لینے کا الزام درست نہیں۔مزدوروں کوایڈوانس رقم دینے کے علاوہ ہفت واراجرت بھی دی جارہی ہے۔عدالت نے فریقین کے وکلاء کے دلائل سننے کے بعد11بچوں،3 خواتین سمیت22 مزدوروں کو آزاد کردیا۔

مزید : صفحہ آخر