محکمہ آبپاشی کے درجہ چہارم کے 90سے زائد ملازمین نوکریوں پربحال

محکمہ آبپاشی کے درجہ چہارم کے 90سے زائد ملازمین نوکریوں پربحال

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائی کورٹ کے حکم پرمحکمہ آبپاشی کے درجہ چہارم کے 90سے زائد ملازمین کونوکریوں پربحال کردیاگیا، اس بابت سیکرٹری آبپاشی محمد اسداللہ نے عدالت عالیہ میں حاضر ہوکر رپورٹ پیش کردی جس ے بعد جسٹس محمدقاسم خان نے ان کے خلاف دائر توہین عدالت کی درخواست نمٹا دی ۔علی رضا سمیت محکمہ آبپاشی کے 90 سے زائد ملازمین کی طرف سے دائر توہین عدالت کی درخواست میں موقف اختیار کیا گیا تھا کہ عدالتی حکم کے باوجود درجہ چہارم کے درجنوں ملازمین کونوکریوں پر بحال نہیں کیا جا رہا جوکہ واضح طورپرتوہین عدالت ہے۔عدالتی استفسار پر ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل پنجاب سراج الاسلام نے عدالت کوآگاہ کیاکہ سیکرٹری آبپاشی وزیر اعلی کے اجلاس میں شرکت کے سبب عدالت پیش نہیں ہو سکے جس پر عدالت نے سخت اظہار برہمی کرتے ہوئے سیکرٹری آبپاشی کو فوری طور پر عدالت میں طلب کر لیا، عدالتی حکم پرسیکرٹری آبپاشی عدالت میں پیش ہوئے اور عدالت کو بتایا کہ انہیں گزشتہ رات عدالتی حکم بارے علم ہوا جس پرانہوں نے ان ملازمین کو مشروط طور پربحال کردیا ہے اوران ملازمین کی بحالی کے عدالتی فیصلے کے خلاف انٹراکورٹ اپیل دائر کی جاچکی ہے، محکمہ آبپاشی کے بحال ہونے والے ملازمین کی بحالی کو انٹراکورٹ کے فیصلے سے مشروط کیاگیا ہے۔

مزید : صفحہ آخر