ریٹائرڈ خاتون پروفیسر کا قتل، پولیس نے 3سفاک ملزموں کو حراست میں لے لیا

ریٹائرڈ خاتون پروفیسر کا قتل، پولیس نے 3سفاک ملزموں کو حراست میں لے لیا

لا ہور(کرا ئم رپورٹر) سی آئی اے اقبال ٹاؤن نے پنجاب یونیورسٹی نیو کیمپس لاہور میں خاتون پروفیسرطاہرہ پروین کوبے دردی سے قتل کرنے والے تین سفاک ملزمان کوٹریس کر کے حراست میں لے لیا ۔تفصیلات کے مطابق پروفیسر طاہر ہ پروین رہائشی کالونی میں واقع گھر EA/51 میں اکیلی رہائش پذیر تھیں اور ریٹائرمنٹ کے بعد کنٹر یکٹ پر شعبہ مائیکرو بیالوجی ومالیکیولرجینیٹکس میں تدریسی فرائض انجام دے رہی تھیں اور گھر میں کام کاج کے لئے یونیورسٹی ملازمین کو گھر بلالیتی تھیں۔پولیس ٹیم نے پروفیسر طاہرہ پروین کے گھر آنے جانے والے ملازمین کی تفصیل لی اور مشکوک اشخاص کے موبائل نمبر حاصل کیے اور ان کی حرکات و سکنات کا جائزہ لیا۔ مشکوک اشخاص میں شامل الیکٹریشن سجادعلی کو بھی شامل تفتیش کیا ۔پولیس نے اس کی نشاندہی پراس کے گہرے دوست حماد اسلم اور سنیل مسیح کو بھی شامل تفتیش کیا ۔ابتدائی انٹیروگیشن میں معلوم ہوا کہ الیکٹریشن سجاد علی بھی پروفیسر صاحبہ کے گھر گاہے بگاہے بجلی کے کام کے لیے آتا تھااور اسے بخوبی علم تھا کہ پروفیسر گھر میں اکیلی رہتی ہیں اور کافی روپے پیسے بھی ہیں۔سجاد ، حماد اورسنیل مسیح آپس میں گہرے دوست تھے ۔ انہوں نے رقم کے لئے پروفیسر کے گھر واردات کا منصوبہ بنایا۔ سجاد علی گھر میں داخل ہوااور اندر جا کر ایک عدد موبائل فون اور100ڈالرچوری کر لیے ۔اسی اثناء میں پروفیسر طاہرہ پروین نے انہیں دیکھ لیا جس پر ملزم سجاد نے پکڑے جانے کے ڈر سے ان کی گردن پر پیپر نائف کے وا ر کئے اور ان کو قتل کر دیا اور مسروقہ اشیاء لے کر موقع سے فرار ہو گئے۔ زیر حراست ملزمان سے مزید تفتیش جاری ہے۔

قاتل گرفتار

مزید : صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...