پاناما کیس ، فیصلے کی گھڑی آن پہنچی ، سیاسی منظر نامہ تبدیلہونے کا امکان

پاناما کیس ، فیصلے کی گھڑی آن پہنچی ، سیاسی منظر نامہ تبدیلہونے کا امکان

کراچی (رپورٹ نعیم الدین) پانامہ فیصلہ آنے میں چند گھنٹے رہ گئے ہیں، کیا اس فیصلے سے ملک کا سیاسی منظر نامہ تبدیل ہوسکتا ہے ؟ یہ ایک ایسا سوال ہے کہ جو پورے ملک میں ہلچل پیدا کررہا ہے ، لوگ ایک دوسرے سے یہی سوال کرتے نظر آتے ہیں کہ کیا فیصلہ آئے گا ؟ پورا الیکٹرونک میڈیا اسی بحث و مباحثے میں پڑا ہوا ہے ، حکومتی ارکان انتہائی تحمل اور پراعتماد نظر آرہے ہیں ، ان کی گفتگو سے ایسا لگتا ہے کہ وہ فیصلے سے مطمئن ہونگے، جبکہ دوسری جانب تحریک انصاف کے رہنماؤں کی بول چال سے یہ اندازہ ہوتا ہے کہ ہوسکتا ہے کہ فیصلہ حکومت کے خلاف ہو ۔ فیصلہ آنے میں ابھی چند گھنٹے باقی ہیں، جس کے اثرات ملک کی تقدیر پر پڑ سکتے ہیں۔ اس وقت صورتحال یہ ہے کہ ملک کی تمام سیاسی جماعتیں دھرنوں کو اہمیت دے رہی ہیں ، جس سے ایسا لگتا ہے کہ ملک میں ایک نیا سیاسی کلچر جنم لے رہا ہے ۔ وزیراعظم میاں محمد نواز شریف نے گذشتہ دنوں سندھ کے پے در پے دورے کیے ہیں جس سے بخوبی اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ ان کے یہ دورے آئندہ انتخابات کا ایک حصہ ہیں ۔ دوسری جانب تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان بھی جلد ہی سندھ کے دورے کرنے کا عندیہ دے چکے ہیں۔ پیپلزپارٹی نے بھی لوڈ شیڈنگ کے خلاف پورے ملک میں احتجاجی دھرنوں کا اعلان کردیا ہے ، جبکہ مصطفی کمال کی پارٹی پچھلے 12 دنوں سے پریس کلب پر مسائل کے حل کیلئے دھرنا دیے ہوئے ہے۔ دوسرے سیاسی جماعتیں بھی سڑکوں پر آنے کیلئے تیار بیٹھی ہیں جو کہ اپنی سرگرمیاں دھرنوں سے شروع کرنے والی ہیں۔ اس حساب سے دیکھا جائے تو آنے والے ایک دو مہینے انتہائی اہمیت کے حامل ہیں ۔ پانامہ فیصلے کے بعد کونسی سیاسی پارٹی دھمال ڈالے گی اور کونسی پارٹی سوگ منائے گی ، یہ کہنا قبل از وقت ہے۔ بعض سیاسی حلقوں کی رائے ہے کہ فیصلہ ایسا بھی آسکتا ہے کہ جس میں تمام سیاسی جماعتیں خوش نظر آئیں گی لیکن بعد میں آنسوؤں سے روئیں گی۔ ان حلقوں کا کہنا ہے کہ فیصلہ ایسا ہونا چاہیے کہ جس سے ملک کی تقدیر بہتر ہوسکے اور ملک کا مستقبل روشن نظر آئے۔

مزید : کراچی صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...