جنوبی پنجاب علیحدہ صوبہ بنانے کا بل پارلیمنٹ میں پیش نہ کرنے کیخلاف درخواست پر ایڈیشنل اٹارنی جنرل اور ایڈووکیٹ جنرل کو 4 مئی کو پیش ہونے کیلئے نوٹس جاری

جنوبی پنجاب علیحدہ صوبہ بنانے کا بل پارلیمنٹ میں پیش نہ کرنے کیخلاف درخواست ...

ملتان (خبر نگار خصوصی)لا ہورہائیکورٹ ملتان بینچ کے جسٹس نے جنوبی (بقیہ نمبر31صفحہ12پر )

(بقیہ نمبر1صفحہ12پر )پنجاب کو علیحدہ صوبہ بنانے کا بل پارلیمنٹ میں پیش نہ کرنے کے خلاف درخواست میں ایڈیشنل اٹارنی جنرل پاکستان اورایڈووکیٹ جنرل پنجاب کو 4 مئی کو پیش ہونے کے لئے نوٹس جاری کرنیکا حکم دیاہے۔فاضل عدالت میں کاشف ندیم نے وکیل سابق ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل پنجاب خادم ندیم ملک کے ذریعے درخواست دائر کی تھی کہ پنجاب اسمبلی کی جانب سے جنوبی پنجاب کو علیحدہ صوبہ بنانے کے لئے ایک قراردادپیش کی گئی جو متفقہ طورپر منظورکرلی گئی بعد ازاں قواعد کے تحت مزید کارروائی کے لئے قراردادقومی اسمبلی کو بھجوائی گئی لیکن اس پر آج تک کوئی کارروائی عمل میں نہیں لائی گئی ہے جبکہ صوبہ پنجاب آبادی کے لحاظ سے بڑاصوبہ ہے اورعام لوگوں کو دارلحکومت تک آسان رسائی نہیں ہونے کی وجہ سے مشکلات کا سامنا ہے نیز دیگر کئی مشکلات درپیش ہیں جس کے علیحدہ صوبہ کا قیا م ضروری ہے لیکن اس پرپارلیمنٹ کی جانب بل بناکر پیش نہیں کیا جارہاہے تاکہ اس پر رائے شماری ہوسکے اس لئے قراردادکا بل پارلیمنٹ میں پیش کرنے کا حکم دیاجائے۔

اٹارنی جنرل

مزید : ملتان صفحہ آخر