قندیل بلوچ قتل کیس میں مقتولہ کے بھائی کی درخواست ضمانت منظور

قندیل بلوچ قتل کیس میں مقتولہ کے بھائی کی درخواست ضمانت منظور

ملتان (خبر نگار خصوصی)لا ہورہائیکورٹ ملتان بینچ نے قندیل بلوچ قتل(بقیہ نمبر32صفحہ12پر )

کیس میں مقتولہ کے بھائی کی درخواست ضمانت منظورکرنیکا حکم دیاہے۔فاضل عدالت میں مقتولہ کے بھائی محمداسلم شاہین نے درخواست ضمانت قبل ازگرفتاری دائرکی تھی کہ اس کے خلاف اپنی بہن قندیل بلوچ کو قتل کرنے کامقدمہ تھانہ مظفرآبادمیں درج کیاگیا جس میں دیگر ملزموں کو بھی شامل کیا گیاہے جبکہ درخواست گذارکا قتل سے کوئی تعلق نہیں ہے کیونکہ وقوعہ سے قبل اوربعد میں درخواست گذار کی موجودگی کے کوئی ثبوت موجود نہیں ہیں اورنہ ہی درخواست گذارکاکسی رابطہ تھا اوراس کو سراسر بدنیتی کے بنیادپر غلط طورپر مقدمہ میں ملوث کیاگیاہے نیز وہ وقوعہ کے روزکراچی میں تعینات تھااورمقدمہ میں تفتیش میں شامل ہونے کے لئے ملتان میں تبادلہ بھی کرایاہے جبکہ تفتیش میں مدعی والدین کے بیانات بھی درست ثابت نہیں ہوئے ہیں اس لئے تفتیش میں بھی اس کو بے گناہ قراردیاگیاہے لیکن ایڈیشنل سیشن جج کی عدالت سے اس کی ضمانت خارج کردی گئی تھی اس لئے اب ضمانت منظورکرنے کا حکم دیاجائے۔فاضل عدالت میں پراسیکیوٹر کی جانب سے دلائل دئیے گئے کہ ملزم کو خود اس کے والدین نے مقدمہ میں نامزدکیاہے اورقتل کرنے والے بھائی وسیم سے رابطے میں ہونے اوراکسانے کا الزام عائدکیاگیا ہے نیز ملزم کے خلاف قتل کی پلاننگ میں شامل ہونے کے ثبوت بھی موجود ہیں جبکہ مقدمہ حساس نوعیت کا ہونے کے ساتھ عالمی شہرت بھی رکھتاہے اورانصاف کے تقاضے پورے کرنے کے لئے ملزم کی ضمانت خارج کرکے شامل تفتیش کرایاجائے تاکہ مقدمہ کے اصل حقائق اورملزم کی شمولیت کو ثابت کیا جاسکے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر