اپریل میں پاور پلانٹس بند کرنے کی غلطی کی ،یکم مئی سے غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ ختم ہو جائیگی :خواجہ آصف

اپریل میں پاور پلانٹس بند کرنے کی غلطی کی ،یکم مئی سے غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ ...

اسلام آباد (اے این این ) پانی و بجلی کے وزیر خواجہ محمد آصف نے پاور پلانٹس کی مرمت نہ کرانے اور اپریل میں بند کرنے کی غلطی کا اعتراف کرتے ہوئے کہاہے کہ درجہ حرارت اچانک بڑھنے سے بجلی کی طلب میں اضافہ ہو گیا لیکن اس بحران پر 8 سے 10 روز میں قابو پالیں گے، سسٹم میں مزید چھ ہزار میگاواٹ بجلی نہ آئی تو میرا گریبان حاضر ہے ،دسمبر میں بجلی کا شارٹ فال ختم ہو جائیگا، 2018 میں لوڈشیڈنگ ختم کرنے کا وعدہ پورا کریں گے ۔ قومی اسمبلی کے اجلاس میں ملک میں جاری حالیہ بجلی بحران پردلاؤدلاؤنوٹس کا جواب دیتے ہوئے خواجہ آصف نے کہا کہ درجہ حرارت اچانک بڑھنے سے بجلی کی طلب میں اضافہ ہو گیا، جس کی وجہ سے بجلی کی طلب میں گزشتہ اپریل کی نسبت 2700 میگاواٹ اضافہ ہوا ،10 سے 15 روز میں بجلی کا بحران پیدا ہوا ہے، اس عارضی بحران پر آئندہ 10 روز تک قابو پالیں گے آج سے بجلی کی ترسیل میں بہتری آنا شروع ہو جائے گی۔ یکم مئی سے غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ ختم ہوجائے گی۔ انہوں نے کہا کہ مرمت کی وجہ سے پلانٹ بند ہوئے اور اس وقت بجلی کا شارٹ فال 5 ہزار 200 میگاواٹ کا ہے، اعتراف کرتا ہوں کہ مارچ میں پلانٹس کی مرمت مکمل ہوجانا چاہئے تھی، گزشتہ 2 سال سے صنعتیں میں لوڈ شیڈنگ سے مستثنیٰ ہیں، آج بھی انڈسٹریز میں زیرو لوڈشیڈنگ ہے، جس سے مزدوروں کو روزگار مل رہا ہے، رمضان المبارک میں سحر وافطار کے اوقات میں لوڈ شیڈنگ نہ کرنے سے صنعتوں میں ایک شفٹ کی لوڈ شیڈنگ ہوگی۔

مزید : کراچی صفحہ اول