سپریم کورٹ وزیر اعظم کو مستعفی ہونے کا نہیں کہہ سکتی : سابق اٹارنی جنرل عرفان قادر کی رائے

سپریم کورٹ وزیر اعظم کو مستعفی ہونے کا نہیں کہہ سکتی : سابق اٹارنی جنرل عرفان ...
سپریم کورٹ وزیر اعظم کو مستعفی ہونے کا نہیں کہہ سکتی : سابق اٹارنی جنرل عرفان قادر کی رائے

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن ) سابق اٹارنی جنرل عرفان قادر نے آئین اور قانون کا حوالہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ سپریم کورٹ وزیر اعظم نوازشریف کو مستعفی ہونے کا نہیں کہہ سکتی .

سماءٹی وی کے مطابق پروگرام ”ندیم ملک لائیو“ میں اینکر پرسن ندیم ملک کے سوال کا جوا ب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ بلکل نہیں ہو سکتا اور سپریم کورٹ وزیر اعظم نوازشریف کو نہیں کہہ سکتی کہ آپ سٹیپ ڈاﺅن کر جائیں ۔ انہوں نے سوال کیا کہ سپریم کورٹ وزیر اعظم کو یہ حکم کس قانون اور کس آئین کے تحت دے گی ؟ ”یہ بلکل نہیں ہو سکتا “۔کیونکہ اگر سپریم کورٹ ایسا کرے گی تو بھی حکومت اس کو رد کر دے گی اور وہ کہیں گے کہ ہم نے آئین کے تحت حلف اٹھایا ہوا ہے ۔

زرداری کے سرے محل پر کسی نے یہ کام نہیں کیا ۔۔۔وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے ایسی بات کر دی کہ سن کرہر کوئی حیران رہ جائے گا

سابق اٹارنی جنرل عرفان قادر کا کہنا تھا کہ کوئی بھی غیر آئینی اور غیر قانونی طریقہ سپریم کورٹ کیلئے بہت مشکل ہو گا لیکن اگر ماضی کی مثالیں سامنے رکھی جائیں توعدالت بہت سے ارکان قومی اسمبلی کو صادق اور امین نہ ہونے پر نااہل کر چکی ہے ۔

پاناما لیکس میں سامنے آنے والے پاکستانیوں سمیت 3300 افراد کیلئے جیل تیار

انہوں نے کہا کہ یوسف رضا گیلانی کو بھی عدالت نے خود ہی نااہل کیا اگر ان مثالوں کو سامنے رکھا جائے اور اگر عدالت ان مثالوں کا اب اپلائی نہ کرے تو عدالت کیلئے یہ بہت مشکل ہے کہ ایک طرف ان کے عدالتی فیصلے اور ایک طرف آئین۔

مزید : قومی