پاناما کیس کا فیصلہ مخالفت میں آیا تو ن لیگ دھرنے دے گی

پاناما کیس کا فیصلہ مخالفت میں آیا تو ن لیگ دھرنے دے گی

لاہور (ویب ڈیسک) مسلم لیگ ن کے  سرگرم رہنما و وفاقی وزیر ریلویز خواجہ سعد رفیق کی زیر صدارت 90 شاہراہ قائداعظم اور کینٹ میں ہونے والے دو مختلف اجلاسوں میں پاناما کیس کے حوالے سے حکمت عملی طے کی گئی ہے اور کہا گیا ہے کہ فیصلہ مخالفت میں آیا تو مسلم لیگ ن احتجاجی دھرنا دے گی اور اگر فیصلہ حق میں آیا تو یہ خوشی کے دھرنے ہوں گے۔

روزنامہ ایکسپریس کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کی بھکھی پاور پلانٹ کی افتتاحی تقریب سے خطاب کے دوران وزیراعظم نواز شریف کی خدمات کو 40 سال تک یاد رکھے جانے کے حوالے سے کی گئی بات پر تقریب کے دوران ہی چہ مگوئیاں شروع ہوگئیں، سیاسی و سرکاری شخصیات فیصلہ مخالفت میں آنے کے تاثر پر گفتگو کرتے رہے اور یہ کہا گیا کہ شاید حکومت نے محسوس کرلیا ہے کہ پاناما کیس کے فیصلے میں ضرور کچھ ہونے جارہا ہے؟ وزیراعلیٰ کی طرف سے یہ کہا گیا تھا کہ بے حد احترام کے ساتھ کہتا ہوں کہ محترم جج صاحب نے کہا ہے کہ پاناما کیس کا ایسا فیصلہ آئے گا کہ قوم اسے 20 سال تک یاد رکھے گی لیکن میں بتانا چاہتا ہوں کہ وزیراعطم نواز شریف نے توانائی کے منصوبوں سمیت دیگر جو ترقیاتی کام کئے ہیں ان کی وجہ سے عوام آپ کو کم ز کم 40 سال یاد رکھیں گے۔

مزید : لاہور

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...