سپریم کورٹ نے جے آئی ٹی میں وزیراعظم،حسن اور حسین نواز کو پیش ہونے کا حکم دیدیا

سپریم کورٹ نے جے آئی ٹی میں وزیراعظم،حسن اور حسین نواز کو پیش ہونے کا حکم ...

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ نے پانامہ کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے کہا ہے کہ چیئرمین نیب کی ناکامی کے باعث جے آئی ٹی بنانے کا حکم دیدیا ہے اور وزیراعظم اور ان کے بیٹوں حسن اور حسین نواز کو جے آئی ٹی کے سامنے پیش ہونا ہوگا۔

سپریم کورٹ نے چیئر مین نیب کو بھی زور دار جھٹکا دے دیا

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ نے فیصلہ سناتے ہوئے کہا کہ چیئرمین نیب اپنا کام کرنے میں ناکام رہے اس لئے جے آئی ٹی بنائی جائے اور وزیراعظم حسن اور حسین جے آئی ٹی کے سامنے پیش ہوں اور جے آئی ٹی ہر دو ہفتے بعد بنچ کو  رپورٹ پیش کرےجبکہ جے آئی ٹی میں ایف آئی اے،آئی ایس آئی،نیب ایم آئی،ایف آئی اے،ایس ای سی اور سٹیٹ بنک نمائندے شامل ہونگے جو تحقیقات کریںگے جبکہ جے آئی ٹی کی سربراہی چوہدری نثار کے ماتحت ایف آئی اے کا افسر کرے گا۔عدالت نے فیصلے میں لکھا کہ ڈی جی ایف آئی اے وائٹ کالر کرائم روکنے میں ناکام رہے جبکہ چیئرمین نیب اپنا کام کرنے میں ناکام رہے۔

بریکنگ نیوز: سپریم کورٹ کا پاناما کیس کی تحقیات کیلئے جے آئی ٹی بنانے، وزیراعظم ، حسن نواز اور حسین نواز کو جے آئی ٹی کے سامنے پیش ہونے کا حکم, لائیو اپ ڈیٹس

مزید : قومی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...