پنجاب لینڈ ریکارڈ اتھارٹی،ممبران بورڈ آف میٹنگ کی تبدیلی کی سمری مسترد

پنجاب لینڈ ریکارڈ اتھارٹی،ممبران بورڈ آف میٹنگ کی تبدیلی کی سمری مسترد

لاہور (عامر بٹ سے )پنجاب لینڈ ریکارڈ اتھارٹی کی جانب بورڈ آف میٹنگ کے ممبران کی تبدیلی، اور نئے ممبران کی شمولیت کیلئے بھجوائی جانے والی سمری کو سیکرٹری لاء نے غیر تسلی بخش قرار دے دیا۔ جبکہ پنجاب لینڈ ریکارڈ اتھارٹی کے ایکٹ پر سوالات اٹھا دیے۔ روز نامہ پاکستان کو ملنے والی معلومات کے مطابق پنجاب لینڈ ریکارڈ اتھارٹی کے ڈی جی راؤ اسلم کی جانب سے گزشتہ روز پنجاب حکومت کو سمری بھجوائی گئی جس میں مؤقف اختیار کیا گیا کہ پنجاب لینڈ ریکارڈ اتھارٹی کے بورڈ آف ممبران میں شامل افسران کی تبدیلی اور نئے ممبران کی شمولیت کرنے کی پی ایل آر اے انتظامیہ کو اجازت دی جائے جس پر سیکرٹری قانون نے پنجاب لینڈ ریکارڈ اتھارٹی کی اس سمری کو غیر تسلی بخش قرار دے دیا اور ایکٹ کے مختلف سیکشن پر بھی اعتراضات اٹھا دیے جبکہ پی ایل آر اے کی جانب سے ڈیمانڈ کی گئی کہ ایک فنانس ، اسٹیٹ بنک سمیت دیگر نمائندے بھی بور ڈ آف میٹنگ میں شامل کیے جائیں پی ایل آر اے انتظامیہ نے مزید یہ بھی موقف اختیار کیا کہ بورڈ میں اپنے ممبران ہیں جن کو اکٹھا کرنے میں ٹائم لگتاہے اور متعدد بار ایسا ہو ا ہے کہ ممبران کی عدم دستیابی کی وجہ سے میٹنگ عرصہ دراز تک التواء کا شکار رہی ہے تاہم سیکرٹری قانون نے اس سمری کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایسے امیدوار بورڈ آف میٹنگ میں شامل نہیں کیے جا سکتے جن کا اس پروجیکٹ سے کوئی تعلق نہ ہو۔سکرٹری قانون نے سمری پر اعتراض لگاتے ھوئے واپس بجھوا دی روز نامہ پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے ڈی جی پنجاب لینڈ ریکارڈ اتھارٹی راو اسلم نے موقف دیا کیہم نے اس سمری پر جو اعتراض لگے ہیں وہ جلد دور کر دیں گے۔

پنجاب لینڈ اتھارٹی

مزید : صفحہ آخر