کورونا وائرس کے مبینہ لیک کی ذمہ دار سمجھی جانے والی ووہان لیبارٹری کی حیران کن تصویر سامنے آگئی

کورونا وائرس کے مبینہ لیک کی ذمہ دار سمجھی جانے والی ووہان لیبارٹری کی حیران ...
کورونا وائرس کے مبینہ لیک کی ذمہ دار سمجھی جانے والی ووہان لیبارٹری کی حیران کن تصویر سامنے آگئی

  

بیجنگ(ڈیلی پاکستان آن لائن ) چین کے شہر ووہان سے مبینہ طور پر پھیلنے والے کورونا وائرس سے اب تک دنیا بھر میں 23 لاکھ سے زائد افراد متاثر ہوچکے ہیں جن میں سے ایک لاکھ 61 ہزار سے زائد افراد ہلاک بھی ہوچکے ہیں۔غیر ملکی خبر رساں ادارے ڈیلی میل آن لائن کے مطابق چینی سرکاری اخبار چائنہ ڈیلی نے 2018 میں ووہان انسٹی ٹیوٹ آف وائیرولوجی کی لیب کی تصاویر شائع کی تھیں جس میں 1500 اقسام کے مختلف وائرسز کے نمونے ٹوٹی ہوئی سیل والے ریفریجیریٹر میں رکھے گئے تھے۔

یہ وہی لیبارٹری ہے جو کہ ووہان کی سی فوڈ مارکیٹ کے قریب واقع ہے اور خیال کیا جارہا ہے کہ کورونا وائرس اسی علاقے سے پھیلا ہے۔گذشتہ کئی دنوں سے انٹرنیٹ پر ووہان کے انسٹی ٹیوٹ آف وائیرولوجی کی تصاویر وائرل ہورہی ہیں اور صارفین کی جانب سے مختلف قیاس آرائیاں کی جارہی ہیں۔اس حوالے سے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ بھی کہہ چکے ہیں کہ امریکی حکومت لیب سے اس وائرس کے مبینہ اخراج کے معاملے پر تحقیقات کررہی ہے۔دوسری جانب ووہان کے انسٹی ٹیوٹ آف وائیرولوجی کا کہنا ہے کہ لیب سے وائرس لیک ہونے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا اس حوالے سے قیاس آرائیوں کو مسترد کرتے ہیں ۔

مزید :

بین الاقوامی -