”جان بوجھ کر وائرس پھیلانا ثابت ہو گیا تو امریکہ باقاعدہ ردعمل دیگا“ ٹرمپ کی چین کو سنگین نتائج کی دھمکی

”جان بوجھ کر وائرس پھیلانا ثابت ہو گیا تو امریکہ باقاعدہ ردعمل دیگا“ ٹرمپ ...

  

واشنگٹن (اظہر زمان، خصوصی رپورٹ) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے چین کو خبردار کیا ہے کہ اگر یہ ثابت ہوگیا کہ اس نے جان بوجھ کر کرونا وائرس پھیلایا ہے تو پھر اسے اس کے نتائج بھگتنے ہوں گے۔ انہوں نے یہ بیان اتوار کی شام وائٹ ہاؤس میں ٹاسک فورس کے ارکان کے ہمراہ معمول کی نیوز بریفنگ کے دوران دیا۔ انہوں نے میڈیا میں گردش کرنے والی ان اطلاعات کی بالواسطہ طور پر تصدیق کردی کہ امریکی انٹیلی جنس ووہان کی ایک تجربہ گاہ میں کرونا وائرس کے ممکنہ آغاز کی تفتیش کر رہی ہے۔ صدر ٹرمپ نے فی الحال یہ الزام نہیں لگایا کہ چین نے جان بوجھ کر کروناوائرس کو پھیلایا ہے اوراس سلسلے میں باقاعدہ ردعمل کے اظہار کے لئے تفتیش کے انتظار کا عندیہ دیا ہے۔ اس بریفنگ کے دوران ٹاسک فورس کی ایک میڈیکل رکن ڈاکٹر ڈبیورا برکس نے کہا کہ چونکہ کروناوائرس کا آغاز چین سے ہوا ہے اس لئے اس کا اخلاقی فرض ہے کہ وہ اس سلسلے میں اپنے رسپانس میں شفافیت پیدا کرے۔ صدر ٹرمپ نے چین کا ذکر کرتے ہوئے مزید کہا کہ ”اگر یہ غلطی تھی تو غلطی صرف غلطی ہوتی ہے تاہم اگرانہوں نے جان بوجھ کر ایسا کیا تو پھروہ اس کے ذمہ دار ہیں اور انہیں اس کے نتائج بھی بھگتنے ہوں گے۔ اس دوران نائب صدر مائیک پنس نے واضح کیا کہ امریکہ مناسب وقت پر اس معاملے کی پوری تحقیقات کرنا چاہتا ہے۔ انہوں نے اتوار کے روز ”فوکس نیوز“ کے ساتھ انٹرویو میں عالمی ادارہ صحت پر الزام لگایا کہ وہ امریکہ اور باقی دنیا کو چین میں اس وائرس کے پھیلاؤ کے بارے میں مناسب آگاہ کرنے میں ناکام رہا ہے۔ جہاں تک چین کے ساتھ امریکہ کے تعلقات کا معاملہ ہے ہفتے کے روز اس سلسلے میں ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے واضح کیا کہ کرونا وائرس کے مسئلے سے پہلے تک ہمارے چین کے ساتھ تعلقات بہت اچھے تھے۔ اب سارا انحصار اس بات پر ہے کہ تحقیقات میں کیا ثابت ہوتا ہے۔ امریکی میڈیا نے فرانس سے تعلق رکھنے والے نوبل انعام یافتہ سائنس دان پروفیسر لک مونٹگ نیئر کا ایک انٹرویو نشر کیا ہے جس میں انہوں نے یہ خیال ظاہر کیا ہے کہ کرونا وائرس ”تجربہ گاہ کا حادثہ“ ہے اس سائنس دان کو ایڈز کا وائرس دریافت کرنے پر نوبل انعام ملا تھا۔ پروفیسر مونٹگ نیئر نے اپنی اطلاعات کی بنیاد پر بتایا کہ چینی سائنس دان ووہان کی نیشنل بائیو سیفٹی لیبارٹری میں ایڈز کے وائرس کیلئے ویکسین تیار کرنے میں مصروف تھے کہ اس ”صنعتی حادثے“ کے نتیجے میں کرونا وائرس تیار ہوگیا۔

ٹرمپ دھمکی

مزید :

صفحہ اول -