144وینٹی لیٹر ز کرونا مریضوں کیلئے مختص، عوام میں 1ارب کا راشن تقسیم کیا

        144وینٹی لیٹر ز کرونا مریضوں کیلئے مختص، عوام میں 1ارب کا راشن تقسیم کیا

  

اسلام ا ٓ باد (آئی این پی) سپریم کورٹ میں کرونا وائرس ازخود نوٹس کیس میں چاروں صوبائی حکومتوں نے رپورٹس جمع کرا دیں،پانچ رکنی لارجر بنچ (آج) پیر کو کیس کی سماعت کرے گا۔سپریم کورٹ میں کرونا وائرس ازخود نوٹس کیس میں سندھ حکومت نے اپنی رپورٹ میں بتایا کہ صوبے میں صرف 383 وینٹی لیٹر فعال ہیں جن میں سے 144وینٹی لیٹرز کو کرونا مریضوں کیلئے مختص کردیا گیاہے، مریضوں کی تعداد بڑھنے پر کراچی کی11 یوسیز کو سیل کیا گیا،ان یونین کونسلز کی آبادی6لاکھ74 ہزار سے زیادہ ہے اور وہاں 6673 راشن بیگ تقسیم کیے جبکہ صوبے میں وضع کردہ طریقہ کار کے تحت 2 لاکھ85 ہزار راشن بیگ تقسیم کیے، راشن تقسیم کیلئے ایک ارب 5کروڑ 80لاکھ روپے دو اقساط میں جاری کئے۔ 26مارچ کوپہلی قسط58کروڑ اور 6 اپریل کو دوسری قسط 50 کروڑ روپے کی جاری کی۔8ارب روپے خرچ کرنے کے بیانات سندھ حکومت کی ساکھ کو نقصان پہنچانے کے مترادف ہیں، راشن کا حصول یوٹیلیٹی سٹورز سمیت دستیاب وینڈرز سے کیا گیا۔ ڈپٹی کمشنرز کا ریکارڈ موجود ہے جو عدالتی حکم پر جمع کرایا جاسکتا ہے۔بلوچستان حکومت نے بتایا کہ قرنطینہ مراکز اور دیگر سہولیات کی فراہمی کیلئے این ڈی ایم اے کوئٹہ اور ہیلتھ منسٹری کو خطوط لکھے گئے،ملٹری لینڈ اینڈ کینٹ ڈیپارٹمنٹ نے بتایا کہ کنٹونمنٹ ہسپتالوں کے طبی عملہ کو حفاظتی طبی سامان مہیا گیا ہے۔ پانچ رکنی لارجر بنچ (آج) پیر کو کیس کی سماعت کرے گا۔

سندھ جواب

مزید :

صفحہ اول -