طور خم، تفتان سے پاکستانیوں کی آمد، پی آئی اے کی خصوصی فلائٹس جاری

  طور خم، تفتان سے پاکستانیوں کی آمد، پی آئی اے کی خصوصی فلائٹس جاری

  

راولپنڈی،کراچی،پشاور(نیوز ایجنسیاں، مانیٹرنگ ڈیسک) کرونا وباء کے پیش نظر عالمی لاک ڈاؤن کے باعث مختلف ممالک میں پھنسے پاکستانی شہریوں کی وطن واپسی کیلئے پی آئی اے کی خصوصی پروازوں کا سلسلہ جاری ہے، اس ضمن میں پی کے 783 گزشتہ روزکراچی سے ٹورنٹو کے لیے روانہ ہوئی۔ذرائع کے مطابق کینیڈا میں مستقل قیام، ملازمت اور تعلیمی ویزہ رکھنے والے اس فلائٹ سے روانہ ہوئے جبکہ چند غیر ملکی شہریوں کی بھی اس پرواز میں بکنگ تھی۔ مختلف ممالک میں 43 ہزار پاکستانی پھنسے ہوئے ہیں اورواپسی کے لئے منتظر ہیں،انممالک میں میں ترکی، بنگلا دیش اور کرغزستان بھی شامل ہیں۔افغانستان میں پھنسے پاکستانی شہریوں کی وطن واپسی کا سلسلہ شروع ہوگیا،طورخم سرحد یک طرفہ طور پر بحال ہونے پر 200 پاکستانی شہری پاکستان میں داخل ہوگئے، مزید پاکستانیوں کو دو روز بعد وطن واپس آنے کی اجازت دی جائے گی۔ واپس آنے والے دوسو پاکستانی شہریوں کو قرنطینہ سینٹر منتقل کر دیا گیا۔ افغانستان میں ڈیڑھ ہزار پاکستانی شہری لاک ڈاؤن کے باعث پھنس گئے تھے۔امریکا اور برطانیہ، پاکستان میں لاک ڈاؤن اور فضائی آپریشنز کی بندش کے باعث پھنسے اپنے شہریوں کی وطن واپسی کے لیے 16 خصوصی پروازوں چلائیں گے۔ امریکہ رواں ہفتے اسلام آباد اور کراچی سے اپنے 2 ہزار 200 سے زائد شہریوں کی وطن روانگی کیلئے کے لیے 6 چارٹرڈ پروازیں چلائے گا۔دوسری جانب پاکستان نے برطانیہ کو 10 خصوصی پروازوں کی اجازت دی ہے جو پاکستان میں پھنسے اپنے اڑھائی ہزار شہریوں کو ریسکیو کریں گی۔پروازیں آج سے شروع، 7 دن تک جاری رہیں گی۔ لاہور سے 21 سے 23 اپریل تک پروازیں چلیں گی۔دفتر خارجہ کے مطابق28 فروری سے 15 اپریل تک تفتان بارڈر سے 6 ہزار 800 پاکستانی واپس آئے ہیں۔ترجمان دفتر خارجہ عائشہ فاروقی نے بتایا کہ ایران میں اب بھی 3 سو زائرین موجود ہیں اور واپسی کی پروازوں کے منتظر ہیں کیوں کہ وہ سڑک کے ذریعے سفر نہیں کرسکتے اور انہیں سفارتخانے کی جانب سے ہوٹلز مہیا کیے گئے ہیں۔ تقریباً 200 پاکستانی طلبہ جو ایرانی یونیورسٹیز میں زیر تعلیم ہیں وہ بھی سالانہ چھٹیوں کی وجہ سے وطن واپسی کے منتظر ہیں۔

خصوصی پروازیں

مزید :

صفحہ اول -