ڈاکٹر ز اور پیرامیڈیکل سٹاف ہمارے ہیروز، حکومت ان پر لاٹھیاں بر سارہی ہے: سرا ج الحق

  ڈاکٹر ز اور پیرامیڈیکل سٹاف ہمارے ہیروز، حکومت ان پر لاٹھیاں بر سارہی ہے: ...

  

لاہور(این این آئی) امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سرا ج الحق نے کہاہے کہ غریب افراد کے لیے سرکار کے دروازے بند ہیں، حکومت صرف میڈیا پر پروپیگنڈا کے ذریعے اپنی کارکردگی کا اظہار کر رہی ہے، کرونا کے خلاف سیاسی قیادت کو متحد کرنے کی بجائے وفاقی اور سندھ حکومت نے ایک دوسرے پر الزامات کا افسوس ناک رویہ اپنا رکھاہے، حکومت 12 ہزار روپیہ ان کو دے رہی ہے جن کے نام پہلے سے بے نظیر انکم سپورٹ فنڈ میں رجسٹرڈ ہیں جبکہ لاکھوں مستحقین کا حکومت کے پاس کوئی ڈیٹا ہی نہیں، جماعت اسلامی اور الخدمت فاؤنڈیشن کے ایک لاکھ سے زائد رضا کار پہلے دن سے خدمات سرانجام دے رہے ہیں اور اب تک الخدمت نے ایک ارب سے زائد کا راشن اور حفاظتی سامان عوام میں تقسیم کیا ہے، رضاکار پہلے غریب آبادیوں میں سپرے کا کام مکمل کریں، غریبوں کا خیال رکھنا اور ان کی مشکلات اور پریشانیوں کو دورکرنے کی کوشش کرنا ہمارا دینی فریضہ ہے، ڈاکٹر ز اور پیرا میڈیکل سٹاف ہمار ے اصل ہیروز ہیں، حکومت ان کی حفاظت کرنے کی بجائے ان پر لاٹھیاں برسا رہی ہے، مقبوضہ کشمیر میں ایک طرف نو لاکھ بھارتی فوج کشمیریوں کو محاصرے میں لے کر ان کا قتل عام کر رہی ہے اور دوسری طرف کورونا وبا پھیلی ہوئی ہے جس سے بچاؤ کے لیے انتظامات نہیں کیے جارہے جس کی وجہ سے کشمیری تیزی سے لقمہ اجل بن رہے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے منصورہ میں الخدمت لاہور کے رضا کاروں کو اینٹی کرونا سپرے مشینوں کی حوالگی کے موقع پر میڈیا کے نمائندوں سے گفتگوکرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر جماعت اسلامی کے نیشنل فوکل پرسن اظہر اقبال حسن، امیر وسطی پنجاب محمد جاویدقصوری، امیر لاہور ذکر اللہ مجاہد، مرکزی سیکرٹری اطلاعات قیصر شریف، صدر الخدمت وسطی پنجاب اکرام سبحانی اور الخدمت لاہور کے صدر عبدالعزیز عابد بھی موجود تھے۔سینیٹر سراج الحق نے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل سے اپیل کی ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں خصوصی مشن بھیج کر کشمیریوں کی نسل کشی رکوائیں۔ بھارتی قابض فوج کورونا کو بھی کشمیریوں کے خلاف ہتھیار کے طور پر استعمال کر رہی ہے۔ گزشتہ آٹھ ماہ سے ہسپتال، تعلیمی ادارے اور تمام کاروبار بند ہیں اورکشمیر ی محاصرے کی وجہ سے موت کے منہ میں جارہے ہیں۔ انسانی حقوق کے عالمی اداروں اور او آئی سی کی بھی یہ ذمہ داری ہے کہ کشمیر میں ہونے والے بدترین مظالم کے خلاف آواز بلند کریں۔ اگر عالمی برادری اسی طرح سوئی رہی تو مقبوضہ کشمیر میں انسانی المیہ جنم لے سکتاہے۔سینیٹر سرا ج الحق نے کہاکہ کشمیریوں کو بڑے پیمانے پر سیاسی، جسمانی اور ذہنی تشدد کانشانہ بنایا جارہاہے۔

سرا ج الحق

مزید :

صفحہ آخر -