وہاڑی: کٹا پال سکیم‘ رقوم میں بڑے پیمانے پر کرپشن کا انکشاف

  وہاڑی: کٹا پال سکیم‘ رقوم میں بڑے پیمانے پر کرپشن کا انکشاف

  

وہاڑی (بیورورپورٹ،نامہ نگار)وٹرنری سنٹر 537ای بیمیں کے(بقیہ نمبر21صفحہ6پر)

مبینہ گھپلوں کا انکشاف ہوا ہے واقعات کے مطابق حکومت کی جانب سے لائیو سٹاک کو فروغ کے لئے کٹا پال سکیم کے تحت کٹا پالنے والے کسانوں کو فی کٹا 4 ہزار روپے دئیے جارہے ہیں وٹرنری سنٹر 537 ای بی ڈاکٹرز و عملہ نے کسانوں کے کٹوں کو ٹیگ لگا کر اپنے دوستوں و عزیزواقارب کے نام رجسٹرڈ کردیا اور ان کے نام پر رقم نکلواکر ہڑپ کرلی،نواحی گاوں 555 ای بی کے رہائشی غریب مویشی پال تنویر لنگڑیال نے اپنے بچوں کے ہمراہ احتجاج کرتے ہوئے بتایا کہ ویٹنری سنٹر537 ای بی ڈاکٹرز نے حکومتی کٹا پال مہم کے تحت میرے 8 کٹوں کو ٹیگ لگا کر ارسلان خالق کے نام پررجسٹرڈ کر دیا اور وٹرنری ڈاکٹر عدیل اور ڈاکٹر عظیم شاہد نے مبینہ طور پر میرے پیسوں کا چیک ارسلان خالق نامی شخص کے نام نکال کر پیسے اپنی جیب میں ڈال لئے جب میں نے ان سے اپنی رقم بارے پوچھا تو انہوں نے کہا کہ محکمہ ہمیں پیسے نہیں دیتامیرے 32 ہزار ہی نہیں بہت سارے لوگوں کے ساتھ ایسا ہوچکا ہے دونوں ڈاکٹر بغیر جانوروں کو چیک کیے سنٹر پر ہی فرضی کاروائیاں ڈال دیتے ہیں بار بار درخواست دینے پر بھی جانوروں کو چیک نہیں کیا جاتا جبکہ فرضی وزٹ ڈال کر سرکاری جمع خرچ کر دیتے ہیں میری وزیراعظم پاکستان,وزیراعلی پنجاب سمیت دیگر متعلقہ حکام سے گزارش ہے کہ معاملہ فوری نوٹس لے کر کاروائی کی جائے

انکشاف

مزید :

ملتان صفحہ آخر -