دکانیں اوربازار مرحلہ وار کھولے جاسکتے ہیں، اکرام اللہ دھاریجو

دکانیں اوربازار مرحلہ وار کھولے جاسکتے ہیں، اکرام اللہ دھاریجو

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)سندھ کے وزیر برائے انسداد بدعنوانی، صنعت و تجارت اور محکمہ باہمی امداد جام اکرام اللہ دھاریجو نے کہا ہے کہ حکومت سندھ کاروباری سرگرمیوں کے خلاف نہیں ہے، ہم کاروباری سرگرمیاں دوبارہ شروع کرنے میں دلچسپی رکھتے ہیں لیکن خدشہ ہے کہ بے احتیاطی کے باعث کورونا وائرس پھیل سکتا ہے، یہی وجہ ہے کہ حکومت سندھ صورتحال سے نمٹنے کے لئے بہت احتیاط سے کام لے رہی ہے۔ یہ بات انہوں نے اتوارکویہاں الیکٹرونک چینلز سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔ انہوں نے کہا کہ حکومت سندھ کو مزدور اور غریب طبقے کو درپیش مسائل سے پوری طرح آگاہی ہے، لیکن ان کی صحت اور زندگی کسی بھی چیز سے زیادہ اہم ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہم ایس او پیز کے تحت دکانیں کھولنے کی کوشش کر رہے ہیں اور ان کے لئے مناسب شیڈول جاری کیا جائے گا۔ جام اکرام اللہ دھاریجو نے کہا کہ ہمارے پاس کورونا وائرس کے مریضوں کی جانچ کرنے کے لئے ٹیسٹنگ کٹس کی کمی کا سامنا ہے۔ ہم اس صلاحیت کو بڑھا رہے ہیں اور کورونا وائرس سے اپنے آپ کو بچانے کے لئے سماجی دوری کے سوا اور کوئی راستہ نہیں ہے۔ صوبائی وزیر برائے انسداد بدعنوانی، صنعت وتجارت اور امداد باہمی جام اکرام اللہ دھاریجو نے کہا کہ بدقسمتی سے وفاقی حکومت نے کورونا وائرس کے معاملے پر حکومت سندھ کے ساتھ مربوط تعاون نہیں کیا اور جب تک کہ تمام صوبے اور وفاقی حکومت ایک جیسی پالیسی لاک ڈان کی پالیسی پر عمل نہیں کریں گے اس کے مطلوبہ نتائج نہیں مل سکے۔ انہوں نے کہا کہ ہم ایک مشکل وقت سے گزر رہے ہیں اور کورونا وائرس کے خلاف ہمیں مل کر کام کرنا ہوگا اور متفقہ پالیسیاں اپنانا پڑیں گی۔ جب تک ہم ایسا نہیں کریں گے کامیابی حاصل نہیں کرسکتے۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -