”ہمارے بورڈ سے وابستہ افراد ذاتی مفادات کے پیچھے بھاگتے ہیں اور بھارتی بورڈ کے لوگ۔۔۔“ رمیز راجہ کے صبر کا پیمانہ لبریز ہو گیا

”ہمارے بورڈ سے وابستہ افراد ذاتی مفادات کے پیچھے بھاگتے ہیں اور بھارتی بورڈ ...
”ہمارے بورڈ سے وابستہ افراد ذاتی مفادات کے پیچھے بھاگتے ہیں اور بھارتی بورڈ کے لوگ۔۔۔“ رمیز راجہ کے صبر کا پیمانہ لبریز ہو گیا

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کرکٹ ٹیم کے مایہ ناز سابق کھلاڑی اور موجودہ کمنٹیٹر رمیز راجہ کا کہنا ہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے ساتھ وابستہ افراد اور عہدے پانے کے منتظر بیشتر لوگ اپنے مفادات کے پیچھے بھاگتے ہیں جبکہ بھارتی حکام اپنے ملک میں کرکٹ کی بہتری کیلئے دل و جان سے کوشش کرتے ہیں،ایمانداری نہ ہو تو کبھی درست سمت میں سفر شروع نہیں ہو سکتا۔

تفصیلات کے مطابق نجی خبر رساں ادارے کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے رمیز راجہ نے کہا کہ پی سی بی سے وابستہ افراد اور عہدے پانے کے منتظر بیشتر افراد قومی سوچ نہیں رکھتے، وہ اپنے مفادات کے ایجنڈے پر عمل پیرا ہوتے ہیں لیکن دوسری طرف بھارت میں دیکھیں تو وہ اس لئے کامیاب ہیں کہ عہدیدار اپنے ملک میں کرکٹ کی بہتری کیلئے سرگرم رہتے ہیں اور ہمارے برعکس وہ دل و جان سے کوشش کرتے ہیں۔ سابق کرکٹرز کو میدان میں کھیل کے تجربے کی بنیاد پر بورڈ میں لینا چاہیے،ان کو مناسب تربیت اور علم دے کر اچھے منتظمین میں تبدیل کیا جا سکتا ہے۔

ایک سوال پر رمیز راجہ نے کہا کہ پرستاروں اور معاشرے کو مل کر دباﺅ بڑھانا چاہیے کہ سپاٹ فکسنگ میں ملوث کرکٹرز کو معاف نہ کیا جائے، اگر ایک بار ہوتا تو کچھ اور بات تھی، یہاں تو ہر سیزن میں ایسا ہونے لگا جو بڑا مایوس کن ہے،اگر افراد اور سسٹم میں ایمانداری نہ ہو توکبھی درست سمت میں سفر شروع نہیں ہو سکتا۔

واضح رہے کہ رمیز راجہ نے چند روز قبل بھی اپنے انٹرویو میں فکسنگ کو کرکٹ کیلئے زہر قاتل قرار دیتے ہوئے بورڈ حکام کی جانب سے بار بار لچک کا مظاہرہ کیے جانے کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔

مزید :

کھیل -