”ہمارے کرکٹرز کرپشن سے پاک ہیں اور۔۔۔“ آئی سی سی کی وارننگ پر بی سی سی آئی نے ایسی بات کہہ دی کہ آپ بھی ہنسی نہ روک پائیں

”ہمارے کرکٹرز کرپشن سے پاک ہیں اور۔۔۔“ آئی سی سی کی وارننگ پر بی سی سی آئی نے ...
”ہمارے کرکٹرز کرپشن سے پاک ہیں اور۔۔۔“ آئی سی سی کی وارننگ پر بی سی سی آئی نے ایسی بات کہہ دی کہ آپ بھی ہنسی نہ روک پائیں

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) بورڈ آف کنٹرول فار کرکٹ ان انڈیا (بی سی سی آئی) نے اپنے کرکٹرز کو فکسنگ پروف قرار دیدیا ہے۔ بی سی سی آئی اینٹی کرپشن یونٹ کے سربراہ اجیت سنگھ کا کہنا ہے کہ کھلاڑی سٹے بازوں کے ممکنہ رابطوں سے خبردار ہیں اور کوئی بھی ایسی کوشش ہوئی تو فوری اطلاع کریں گے، سوشل میڈیا سٹاف اپنی ذمہ داریوں سے اچھی طرح آگاہ ہے اور چھان بین کے قابل ہر بات ہمارے ڈیٹا کا حصہ بنتی جا رہی ہے۔

تفصیلات کے مطابق انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) اینٹی کرپشن یونٹ کے سربراہ الیکس مارشل نے خبردار کیا ہے کہ کورونا وائرس کی وجہ سے کرکٹ معطل لیکن سٹے باز سرگرم ہیں جو لاک ڈاﺅن کی وجہ سے گھروں تک محدود اور سوشل میڈیا پر زیادہ نظر آنے والے کھلاڑیوں کو اپنے جال میں پھنسا سکتے ہیں۔ یوں میچز دوبارہ شروع ہونے پر سٹے بازوں کو اپنے مقاصد پورے کرنے کیلئے آلہ کار میسر آ جائیں گے۔

بی سی سی آئی اینٹی کرپشن یونٹ کے سربراہ اجیت سنگھ نے اس حوالے سے اپنا ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ کھلاڑی سٹے بازوں کے ممکنہ رابطوں سے خبردار ہیں اور انہیں پہلے سے ہی آگاہی دی جا چکی کہ کرپٹ عناصر کس طرح پلیئرز کو جال میں پھنساتے ہیں، انہیں یہ بھی معلوم ہے کہ سوشل میڈیا کو کس طرح رابطے بڑھانے کیلئے استعمال کیا جاتا ہے۔ کھلاڑیوں کو بتا دیا گیاکہ سٹے باز پہلے ایک عام پرستار کے روپ میں توجہ حاصل کرنے کی کوشش کرتے ہیں، پھر آپ کے کسی جاننے والے کو سیڑھی بناکر رابطے بڑھانے کی کوشش ہوتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ سٹے باز کسی نہ کسی طور کرکٹرز کے قریب ہونے کا بہانہ تلاش کرہی لیتے ہیں لیکن اچھی بات یہ ہے کہ کھلاڑی بغیر کسی تاخیر کے ہمیں کسی بھی مشکوک شخص کے بارے میں اطلاع کردیتے ہیں، اب بھی کوئی بھی ایسی کوشش ہوئی تو فوری اطلاع کریں گے۔ کرکٹرز کے سوشل میڈیا پر سوال جواب کے سیشنز میں خطرات سے متعلق سوال پر ان کا کہنا تھا کہ ہم آن لائن گفتگو کو جس حد تک ممکن ہو ٹریک کرتے ہیں اور سوشل میڈیا کے معاملات دیکھنے کیلئے متعین سٹاف اپنی ذمہ داریوں سے اچھی طرح آگاہ ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ سوشل میڈیا پر چھان بین کے قابل ہر بات ہمارے ڈیٹا کا حصہ بنتی جا رہی ہے لیکن لاک ڈاﺅن کی وجہ سے فی الحال ہم کسی مشکوک سرگرمی کو خود جاکر چیک نہیں کرسکتے مگر یہ معلومات ضائع نہیں جائیں گی،حالات بہتر ہونے پر جہاں ضرورت محسوس ہوئی تفتیش بھی کریں گے۔

مزید :

کھیل -