محمد عامر نے پاکستان کرکٹ میں واپسی میں سہولت کاری کا کریڈٹ شاہین آفریدی کو دیدیا

محمد عامر نے پاکستان کرکٹ میں واپسی میں سہولت کاری کا کریڈٹ شاہین آفریدی کو ...
محمد عامر نے پاکستان کرکٹ میں واپسی میں سہولت کاری کا کریڈٹ شاہین آفریدی کو دیدیا
سورس: Instagram/official.mamir

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور (آئی این پی )   پاکستان کے فاسٹ بولر محمد عامر کی تقریبا چار سال کے وقفے کے بعد قومی ٹیم میں واپسی ہوئی ہے،بائیں ہاتھ کے فاسٹ بولر نے ایک ویڈیو میں بات کرتے ہوئے پاکستان کرکٹ بورڈ  کی انتظامیہ بالخصوص شاہین آفریدی کا اپنی صلاحیتوں پر بھروسہ کرنے اور واپسی میں سہولت فراہم کرنے پر شکریہ ادا کیا۔

عامر نے کہا کہ مجھے واپس لانے کا کریڈٹ پاکستان کرکٹ بورڈ اور شاہین آفریدی کی انتظامیہ کو جاتا ہے، وہ مجھ پر اعتماد کرتے ہوئے واپس لائے اور اس وعدے کو پورا کرنے کے لیے کسی قسم کا دبا وہے۔ عامر نے اپنی واپسی کو اپنی پہلی سیریز کی طرح ایک اہم لمحہ قرار دیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ مجھے لگتا ہے کہ میں تقریبا چار سال بعد واپس آ رہا ہوں، اور جب آپ اپنے ملک کی نمائندگی کر رہے ہیں تو یہ ایک مختلف لمحہ ہے اور ایمانداری سے، ایسا محسوس ہوتا ہے کہ یہ میری پہلی سیریز ہے۔ مزید برآں عامر نے کہا کہ ان کی واپسی ٹیم کے آئندہ ورلڈ کپ جیتنے کے مختصر مدت کے ہدف کے گرد مرکوز ہے۔

 عامر کا خیال ہے کہ ٹیم نے حالیہ ٹورنامنٹس کے سیمی فائنلز اور فائنلز میں پہنچ کر شاندار پیش رفت کی ہے، اور ان کا مقصد فتح کی طرف آخری قدم اٹھانے میں ان کی مدد کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں پہلی بار 2009 میں آیا تھا اور پاکستان عالمی چیمپئن بنا تھا۔ پھر ہم نے 2017 کی چیمپئنز ٹرافی کا فائنل کھیلا جس میں ہم چیمپئن بن گئے۔ پی سی بی انتظامیہ نے مجھے ایک مختصر مدت کے مقصد کے ساتھ واپس لایا جو ورلڈ کپ ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستانی ٹیم نے حالیہ ٹورنامنٹس میں سیمی فائنل اور فائنل کھیلے ہیں، اب ہم نے لائن عبور کرنی ہے ،اگر یہ حاصل ہو جاتا ہے تو یہ میرے لیے اعزاز کی بات ہو گی کہ میں اس ٹیم کا حصہ تھا'۔ اپنی فٹنس کے حوالے سے عامر نے کہا کہ وہ 2019 کے مقابلے میں اب بہتر حالت میں ہیں۔

 ان کا کہنا تھا کہ "میرے خیال میں میرا فٹنس لیول 2019 کی نسبت بہت بہتر ہے کیونکہ میں حالیہ برسوں کے مقابلے میں زیادہ فٹ محسوس کر رہا ہوں۔ اگر آپ فٹ نہیں ہیں تو آپ اپنے آپ کو زمین پر ظاہر نہیں کر سکتے چاہے آپ کے پاس کتنی ہی مہارتیں ہوں۔ مجھے یقین ہے کہ فٹنس لیول کے ساتھ جو میرا حق ہے میں ٹیم میں بہت زیادہ حصہ ڈال سکتا ہوں"۔

مزید :

کھیل -