جبری گمشدگیوں کے خلاف بین الاقوامی اتحاد کی فوکل پرسن ایلین ڈیاز بکالسوکو بھارت میں داخل ہونے سے روک دیا گیا

جبری گمشدگیوں کے خلاف بین الاقوامی اتحاد کی فوکل پرسن ایلین ڈیاز بکالسوکو ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


نئی دہلی (اے پی پی) جبری گمشدگیوں کے خلاف ایشین فیڈریشن کی جنرل سیکریٹری میری ایلین ڈیاز بکالسوکو اتوار اور پیر کی درمیانی شب بھارت میں داخل ہونے سے روک دیا گیا ہے۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق میری ایلین جبری گمشدگیوں کے خلاف بین الاقوامی اتحاد کی فوکل پرسن بھی ہیں تنظیم کے دنیا بھر میں 52اراکین ہیں۔11th اگست کوانہوںنےمنیلا میں بھارتی سفارت خانے میںویزاکیلئے درخواست دی تھی۔ تاہم انہیں وقت کم ہونے کا بہانہ بنا کر ویزا جاری نہیں کیا گیا تھا جبکہ ان کی سفری دستاویزات کے مطابق وہ 17اگست کو بھارت جارہی تھیں۔جب وہ اتوار کی شب دس بجے ممبئی کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر پہنچی تو انہیں 9 بھارتی اہلکاروں نے گھیرے میں لے لیا اور کوئی بھی سوال پوچھے بغیران کے لئے ایک فارم پرُ کرنا شروع کردیا جوکہ بھارت میں داخل ہونے سے انکارسے متعلق تھا ۔ ایلین کے کسی بھی سوال یا خدشات کا کوئی جواب نہیں دیاگیا۔ ایلین کو اسی فلائیٹ سے واپس بھیج دیاگیا اور انکا پاسپورٹ منیلا پہنچے پر اس کو دیا گیا ۔

و
اضح رہے کہ مقبوضہ کشمیر میں دوران حراست لاپتہ کشمیریوں کے والدین کی تنظیم (اے پی ڈی پی)جو کہ جبری گمشدگیوں کے خلاف ایشین فیڈریشن کی رکن تنظیم ہے دسمبر2009میں کشمیر میں کشمیرمیں گمنام قبروں اوراجتماعی قبروں کے بارے میں ایک رپورٹ تیار کی تھی جس سے بعدازاں بھارت کو انتہائی شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا تھا ۔یہ دوسرا موقع ہے جب بھارت نے تنظیم کے کسی رکن کو ملک میں داخل ہونے سے روک دیا ہے ۔ 2010میں بھی تنظیم کے ایک انتظامی عہدے دار کو بھارت میں داخلے سے روک دیا گیا تھا جبکہ تنظیم کے نمائندوں پر دنیا کے کسی بھی ملک میں داخلے پر پابندی نہیں ہے ۔ تنظیم نے کہا ہے کہ وہ اس پابندی پر جبری گمشدگیوں سے متعلق اقوام متحدہ کے ورکنگ گروپ اور دیگر کو آگاہ کیا جائے گا ۔

مزید :

عالمی منظر -