خضدار ا، اجتماعی قبروں میں فوج ، سیکیورٹی ادارے اور صوبائی حکومت ملوث نہیں،جوڈیشل کمیشن ٹریبونل رپورٹ

خضدار ا، اجتماعی قبروں میں فوج ، سیکیورٹی ادارے اور صوبائی حکومت ملوث ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

                                      کوئٹہ(آئی این پی)صوبہ بلوچستان کے ضلع خضدار میں اجتماعی قبروں کے معاملے پر بننے والے جوڈیشل کمیشن کے ٹربیونل نے اپنی رپورٹ میں کہا کہ اجتماعی قبروں کے معاملے میں صوبائی حکومت اور سیکیورٹی ادارے ملوث نہیں ہیں‘ناکافی شواہد کی وجہ سے اس معاملے میں کچھ زیادہ پیش رفت نہیں ہوسکی‘ان میں سے زیادہ تر لاشیں ناقابل شناخت تھیں۔ایک رکنی ٹربیونل کے جج جسٹس نور محمد مسکانزئی نے منگل کی صبح اس معاملے کی سماعت کی جس میں کہا گیا کہ ان لاشوں کی دریافت کے معاملے میں فوج، سیکیورٹی ادارے اور صوبائی حکومت ملوثنہیں ہے۔رپورٹ میں کہا گیا کہ ناکافی شواہد کی وجہ سے اس معاملے میں کچھ زیادہ پیش رفت نہیں ہوسکی۔ٹریبیونل کی رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ جو افسران ا±س وقت خضدار میں موجود تھے ان کی جانب سے غفلت برتنے پر ان کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے۔یاد رہے کہ اس واقعہ کے بعد بلوچستان حکومت نے تفتیش کے لیے ہائی کورٹ کے ایک جج پر مشتمل ایک ٹریبیونل قائم کیا تھا۔خضدار میں پیش آنے والے اس واقعہ کے بعد کالعدم بلوچ تنظیموں نے یہ دعویٰ کیا تھا کہ ان قبروں سے برآمد ہونے والی لاشوں کی تعداد دو سو کے لگ بھگ ہے۔ واضح رہے کہ خیال رہے کہ رواں سال جنوری میں خضدار کے علاقے توتک میں ایک اجتماعی قبر سے سولہ لاشیں برآمد ہوئی تھیں۔

مزید :

صفحہ آخر -