پاک فضائیہ کے شاہین راشد منہاس شہید کو جام شہادت نوش کیے 43 برس مکمل

پاک فضائیہ کے شاہین راشد منہاس شہید کو جام شہادت نوش کیے 43 برس مکمل
پاک فضائیہ کے شاہین راشد منہاس شہید کو جام شہادت نوش کیے 43 برس مکمل

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک )وطن کی خاطر اپنی جان نچھاور کرنے والے قوم کے عظیم سپوت راشد منہاس شہید کو جام شہادت نوش کئے43 برس مکمل ہوگئے۔17 فروری 1951 کو کراچی میں پیدا ہونےوالے راشد منہاس نے سینٹ پیٹرک کالج سے سینئیر کیمبرج پاس کیا۔ انکے خاندان کے متعدد افراد مسلح افواج میں اعلیٰ عہدوں پر فائز تھے جس نے ان کے دل میں موجود مادر وطن کے دفاع کے جذبے کو مزید تقویت دی اور اپنے ماموں ونگ کمانڈر سعید سے جذباتی وابستگی کی بنا ءپر انہوں نے 1968 ءمیں پاک فضائیہ میں شمولیت اختیار کی۔20 اگست 1971 ءکو راشد منہاس مسرور ایئر بیس سے اپنی تیسری تنہا پرواز کے لئےT-33جیٹ سے روانہ ہونے لگے تو انکا انسٹرکٹر مطیع الرحمن ان کے ساتھ زبردستی طیارے میں سوار ہوگیا۔ مطیع الرحمن طیارے کو بھارت کی حدود میں لے جانا چاہتا تھا، راشد منہاس نے بھرپور مزاحمت کی لیکن کامیاب نہ ہونے پرمطیع الرحمن کے عزائم خاک میں ملاتے ہوئے طیارے کا رخ زمین کی جانب کردیا اور یوں طیارہ بھارتی سرحد سے 32 میل دور ٹھٹھہ میں گرکر تباہ ہوگیا۔وطن کی خاطر اپنی جان کا نذرانہ پیش کرنے والے راشد منہاس کو ان کی بے مثال قربانی پر اعلیٰ ترین فوجی اعزار نشان حیدر سے نوازا گیا ، وہ اعلی ترین فوجی اعزاز حاصل کرنے والے مسلح افواج کے کم عمر ترین اور پاک فضائیہ کے واحد افسر ہیں۔

مزید :

کراچی -