شیطان صفت خود ساختہ امام کا انتہائی شرمناک فعل

شیطان صفت خود ساختہ امام کا انتہائی شرمناک فعل
شیطان صفت خود ساختہ امام کا انتہائی شرمناک فعل

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

سٹاک ہوم (نیوز ڈیسک) سویڈن کے دارالحکومت میں دو ایرانی نژاد خواتین درجنوں مہمانوں کی موجودگی میں خوشیاں منارہی ہیں کیونکہ وہ ایک ایسا شرمناک کام کرنے میں کامیاب ہوگئی ہیں جس کا ان کے اپنے وطن میں تصور بھی نہیں کیا جاسکتا۔ مصلح اور مریم نامی یہ خواتین ہم جنس پرست ہیں اور نو سال اکٹھے گزارنے کے بعد آپس میں شادی کررہی ہیں اور ان کا ”نکاح“ پڑھانے والا نام نہاد امام خود بھی ہم جنس پرست ہے، جنوبی افریقہ سے تعلق رکھنے والا لڈووک زاہد برملا تسلیم کرتا ہے کہ وہ ہم جنس پرست ہے اور ساتھ ہی امام ہونے کا دعویٰ بھی کرتا ہے۔ اس نے اس موقع پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے بتایا کہ وہ اس بات پر فخر کرتا ہے کہ دونوں خواتین اپنے ملک سے اکٹھے زندگی گزارنے کیلئے نکلیں اور وہاں کے سخت قوانین سے بچ کر سویڈن میں ایک آزادانہ اور خوش و خرم زندگی کا آغاز کررہی ہیں۔ مریم نامی خاتون حاملہ بھی ہے تاہم ابھی یہ بات واضح نہیں کہ دونوں خواتین کی ازدواجی زندگی میں وہ حاملہ کیسے ہوگئی۔ واضح رہے کہ ایران میں ہم جنس پرستی کی سزا 50 کوڑے ہیں اور اگر کوئی دوبارہ یا سہ بارہ پکڑا جائے تو یہی سزا ملتی ہے لیکن چوتھی دفعہ اس کا مرتکب ہونے والوں کیلئے سزائے موت ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -