یوم آزادی پر پولیس اہلکاروں کے تشدد سے زخمی 22سالہ نوجوان دم توڑ گیا ، اے ایس آئی اور 2اہلکار گرفتار

یوم آزادی پر پولیس اہلکاروں کے تشدد سے زخمی 22سالہ نوجوان دم توڑ گیا ، اے ایس ...

لاہور (اپنے کرا ئم ر پو رٹر سے)گارڈن ٹاؤن کے علاقہ کلمہ چوک پر 14 اگست کے روز پو لیس کے مبینہ تشدد سے زخمی ہونے والا نوجوان جناح ہسپتال میں گزشتہ دم توڑ گیا۔ پولیس نے لا ش کو مردہ خا نہ میں منتقل کر کے واقعے میں ملوث اہلکاروں کو حراست میں لے لیا۔تفصیلا ت کے مطابق جو ہر ٹاؤن کا رہائشی 22سالہ زوہیب اپنے دوستو ں کے ہمرا ہ 14اگست کے دن تفر یح کے لئے گھر سے نکلا۔ ایف آئی آر کے مطا بق گارڈن ٹاؤن کے علاقے میں کلمہ چوک انڈر پا س کے قریب 14اگست کے روزچند پولیس اہلکا روں نے روکا اوررشوت ما نگی ، انکا ر پر پولیس اہلکا روں نے زوہیب کوگاڑی سے نکالا اور ڈنڈے مار مار کر اس کو بری طرح گھائل کر دیا۔زخمی کو طبی امدا د کے لئے جنا ح ہسپتا ل منتقل کیا گیا، گزشتہ روز زوہیب زخموں کی تا ب نہ لا تے ہوئے دم توڑ گیا۔ورثاء کا الزام ہے کہ 14 اگست کی رات کو پولیس اہلکاروں نے رشوت نہ دینے پر زوہیب کو انڈر پاس سے نیچے دھکا دیا تھا اور اب صلح کیلئے د ھمکیا ں مل ر ہی ہیں ۔ زوہیب پانچ دن ہسپتال میں زیر علاج رہا اور گزشتہ روز دم توڑ گیا۔پولیس کا کہنا ہے کہ مقدمہ میں نامزد اے ایس آئی سمیت تین اہلکاروں کو گرفتار کرلیا گیا۔زوہیب کی نعش پوسٹ مارٹم کے لئے مردہ خانہ منتقل کردی گئی ہے ۔ وزیر اعلیٰ پنجاب نے گارڈ ن ٹاؤن میں پولیس تشدد سے نوجوان کی ہلاکت پر انکوائری کمیٹی تشکیل دے دی ہے جس پر سیکرٹری پراسیکیوشن اور ڈی آئی جی ابوبکر خدا بخش کو تحقیقات کرنے کاحکم دیا گیا ہے۔ آئی جی پولیس انکوائری کمیٹی کی رپورٹ وزیر اعلیٰ پنجاب کو اگلے تین دن کے اندر پیش کریں گے۔

مزید : علاقائی