ڈاکٹروں کے بعد اساتذہ بھی سڑکوں پر، 24اگست تک احتجاج کا اعلان

ڈاکٹروں کے بعد اساتذہ بھی سڑکوں پر، 24اگست تک احتجاج کا اعلان

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر) ڈاکٹرز کے بعد اساتذہ بھی احتجاج کے راستے پر چل نکلے ۔حکومت پنجاب کی طرف سے بجٹ میں اعلان کردہ اساتذہ کی اپ گریڈیشن ، ان سروس پرموشن اور ٹیچرز پیکیج کی سمری پرتاحال عمل درآمد نہ ہونے پر اساتذہ نے 24اگست سے احتجاج کا اعلان کر دیا ۔۔تفصیلات کے مطابق پنجاب حکومت کی طرف سے گزشتہ بجٹ میں اساتذہ کی اپ گریڈیشن کا اعلان کیا گیا تھا مگر محکمہ خزانہ نے تاحال اپ گریڈیشن کی سمری پر عمل درآمد نہیں کیا جس پر اساتذہ تنظیموں نے 24اگست سے احتجاج کا اعلان کر دیا ہے ۔واضح رہے کہ محکمہ تعلیم کی منظوری کے بعد محکمہ خزانہ نے محکمہ تعلیم کے کلریکل اور ٹیکنیکل سٹاف کی اپ گریڈیشن تو مکمل کر دی ہے جبکہ اساتذہ کو اپ گریڈیشن کے حوالے سے صرف طفل تسلیاں دی جار ہی ہیں ۔پنجاب ٹیچرز یونین کے راہنماء سجاد اکبر کاظمی نے روزنامہ پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ اساتذہ کسی بھی معاشرے میں ایک معمار کی حیثیت رکھتے ہیں لیکن افسوس کے ساتھ کہنا پڑ رہا ہے کہ یہاں اساتذہ کو ان کے جائز حقوق سے بھی محروم رکھا جا رہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہم حکومت کو بتانا چاہتے ہیں کہ اساتذہ کے مسائل کو حل کرنے اور ان کے جائز مطالبات کو مانے بغیر تعلیمی میدان میں ترقی ناممکن ہے۔ کلریکل اور ٹیکنیکل سٹاف کی اپ گریڈیشن ہو چکی اور اس پر عمل درآمد بھی ہو گیا ہے لیکن اساتذہ کو طفل تسلیاں دی جار ہی ہیں جو کہ کسی بھی صورت مین قابل قبول نہیں ۔بجٹ میں اعلان کردہ اپ گریڈیشن کے اعلانات کے باوجود سمری سرد خانے میں پڑی ہے جبکہ ان سروس پرموشن اور ٹیچرز پیکیج پر بھی عمل درآمد نہیں کیا جار ہا ہے۔ جس کیوجہ سے اساتذہ میں شدید مایوسی پھیل رہی ہے ۔ان حالات میں پنجاب ٹیچرز یونین خاموش تماشائی نہیں بنے گی اور کور کمیٹی کے فیصلہ کے مطابق 24اگست کو 2بجے دن لاہورسمیت پنجاب بھر میں پُرامن احتجاجی مظاہرہ کیا جائے گا ۔سپیشل سیکرٹری سکول ایجوکیشن رانا حسن اختر نے روزنامہ پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ گزشتہ دنوں اساتذہ تنظیموں کے ساتھ اپ گریڈیشن کے حوالے سے اجلاس میں اساتذہ کے جتنے بھی مطالبات تھے وہ سب تسلیم کر لئے گئے ہیں۔

مزید : صفحہ آخر