مانیٹرنگ سیل کی ملازمین کیخلاف کارروائیاں بندکرنے کا مطالبہ

مانیٹرنگ سیل کی ملازمین کیخلاف کارروائیاں بندکرنے کا مطالبہ

بٹ خیلہ ( بیورو رپورٹ)ملاکنڈ ڈویژن کے کلاس فور ملازمین کی نمائندہ تنظیم آل درجہ چہارم ملازمین ایسوسی ایشن نے ٹائم سکیل پروموشن، 24گھنٹے ڈیوٹی کے خاتمے اور آٹھ گھنٹے ڈیوٹی کے عدالتی فیصلے پر فوری عمل درآمدجبکہ مانیٹر نگ سیل کی ملازمین کے خلاف بلاوجہ کاروئیاں بند کرنے کا مطالبہ کیا ہے تاکہ ملک وقوم کی ترقی وخوشحالی اور حکومتی مشینری میں ریڈ ھ کی ہڈی کا کردار ادا کرنے والا یہ اہم طبقہ بے چینی وپریشانی سے نکل کر سازگار ماحول میں اپنا کام کرسکے۔یہ مطالبے آل پاکستان درجہ چہارم ملازمین ایسوسی ایشن خیبر پختونخوا کے صدر اکبر خان مہمند کی صدرات میں ڈسٹرکٹ سیکرٹریٹ بٹ خیلہ میں ملاکنڈ ڈویژن کے ساتوں اضلاع کے عہدیداروں کے اہم اجلاس میں کئے گئے اجلاس سے ملاکنڈ کے ضلعی صدر پیر سعید خان سوات کے صدر عمر خطاب چترال کے صدر قاسم جان دیر بالا کے صدر عبدالحق دیر لوئر کے صدر دوست محمد ضلع بونیر کے صدر باچہ خان نوشہرہ کے صدر زاہد زمان محمد نذیر فقیر شاہ عبدالر حمن عبد الرؤف اقبال زمان اپیکا ملاکنڈ کے صدر پیر سلیم خان پی ڈبلیو ڈی لیبر یو نین کے صو بائی صدر گل زمین درجہ چہارم ایسوسی ایشن کے صوبائی جنرل سیکر ٹری اشفاق خٹک نے خطاب کر تے ہو ئے کہا کہ کلاس فور ملازمین ملک قوم کی ترقی جبکہ حکومتی نظام میں اہم کردار ادا کر رہے ہیں اور انھیں مسائل کے پاک خوشحالی موحول کی فراہمی حکومت کی اولین ذمہ داری ہے انھوں نے کہاکہ ملازمین کو اپنے حقوق کے حصول کیلئے خود اتفاق و اتحاد کے ساتھ عملی جدوجہد کرنا ہو گا کیونکہ حرکت میں برکت ہے صوبائی صدر اکبر مہمند نے کہاکہ انٹر نیشنل لیبر لاء اور ملکی قانون کے خلاف صوبے میں لاگو سکول کے چوکیدار وں سے 24گھنٹے ڈیوٹی کے خلاف ہم نے عدالتی فیصلہ لے کر بڑی کامیابی حا صل کی ہے اب اس فیصلے پر عمل درآمداپنے حقوق کے حصول و مسائل کے حل کیلئے ہر ملازم کو منہ میں زبان ڈالنا ہو گی کیونکہ جبکہ بچہ روتا نہیں اس وقت تک ماں دودھ دیتی انھوں نے کہاکہ کلاس فور کیلئے میٹرک سیکنڈ ڈویژن شرط ختم کرسینارٹی کے تحت پروموشن دی جائے گی اس کے علاوہ ایسوسی ایشن کی کوششوں سے ریٹارئرمنٹ پرگروپ انشورنس کی سہولت سے نو لاکھ سے زائد ملازمین مستفید ہونگے جبکہ صوبے کے پانچ سو کلاس فورایمپلائیز کی پروموشن عنقریب متوقع ہے انھوں نے ملاکنڈ ڈویژن کے ملازمین کے چارکول کو ٹھیکیداری نظام کے تحت تقسیم کرنے کی بجائے اسے چارکول الاؤنس میں تبدیل کرنے اور محکمہ صحت و تعلیم میں مانیٹر نگ سیل کی بلاوجہ مداخلت اور کلاس فور ملازمین سے تنخواہوں کی کٹوتی کے ظالمانہ طریقے کو فوری بند کرنے کا مطالبہ کیاجبکہ دیگر مقررین نے فری ٹیکس زون ملاکنڈ کے ملازمین کی تنخواہوں سے انکم ٹیکس کی کٹوتی فوری بند اور عید الضحیٰ کے موقع پر خصو صی بونس دینے کا مطالبہ کیا ۔

مزید : کراچی صفحہ اول